.

ایرانی Press Tv نے جیرمی کوربائن کو رقم کی ادائیگی کی تھی : برطانوی وزیراعظم

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ کے نئے وزیراعظم بورس جانسن نے دارالعوام کے ارکان کے سامنے اپنے پہلے خطاب میں یہ وعدہ کیا ہے کہ وہ یورپی یونین سے برطانیہ کے خروج (بریگزٹ) کے حوالے سے "نیا اسلوب" اپنائیں گے۔

جانسن نے سبک دوش ہونے والی وزیراعظم ٹریزا مے کی کارکردگی کو سراہتے ہوئے مملکتِ متحدہ کے لیے "سنہرے دور" کی توقع کا اظہار کیا۔ بعد ازاں جانسن نے 2009 سے 2012 کے درمیان اپوزیشن لیڈر اور لیبر پارٹی کے سربراہ جیرمی کوربائن کے ایرانی سرکاری انگریزی چینل "Press tv" پر ایک سے زیادہ بار نمودار ہونے کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔ جانسن کے مطابق کوربائن نے اس کے عوض 21 ہزار پاؤنڈز کی رقم وصول کی جب کہ آخر الذکر اس بات کی تردید کرتے ہیں۔

جانسن کا کہنا تھا کہ "ہمیں چاہیے کہ ملک کے حوالے سے اس آدمی پر اعتماد کے حوالے سے سوچیں ... اسے پریس ٹی وی کی جانب سے ادائیگی کی گئی"۔ پریس ٹی وی نے سلطنت عُمان کے پانی میں برطانوی پرچم بردار جہاز پر ایرانی پاسداران انقلاب کے عناصر کے قبضے کے مناظر بھی نشر کیے تھے۔ بعد ازاں جہاز کو ایران کی بندرگاہ بندر عباس لے جایا گیا۔

تاہم لیبر پارٹی کے سربراہ جیرمی کوربائن نے الزام عائد کیا ہے کہ بورس جانسن کے پاس یورپی یونین سے خروج (بریگزٹ) کے لیے "کوئی منصوبہ نہیں ہے"۔

اس سے قبل جانسن کی نئی حکومت کا پہلا اجلاس 10 ڈاؤننگ اسٹریٹ پر منعقد ہوا