عدن: صدارتی محافظ بریگیڈ کیمپ کے اندر جھڑپوں میں 30 افراد ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

یمن کے عبوری دارالحکومت عدن میں ایوان صدر کے محافظ بریگیڈ چار کے اندر ہونے والی جھڑپوں میں کم سے کم 30 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق جمعہ اور ہفتہ کی درمیانی شب عدن میں زور دار دھماکوں کی آوازیں سنی گئیں۔ اس کے علاوہ جبل حدید خور مکسر اوردیگر مقامات پر جھڑپوں کی اطلاعات ہیں۔

صدارتی محافظ بریگیڈ کے ہیڈکواٹرز اور اس کے اطراف میں دونوں متحارب فریقین مختلف نوعیت کا اسلحہ استعمال کر رہے ہیں۔

میڈیکل ذرائع کے مطابق جمعہ کے روز ہونے والی لڑائی میں 8 عام شہری ہلاک ہو گئے۔ یہ جھڑپیں عدن میں حکومتی فورسز اور علاحدگی پسندوں کے درمیان جاری ہیں۔

تشدد کا سلسلہ گذشتہ ہفتے اس وقت شروع ہوا جب یمنی صدر عبد ربہ منصور ھادی کی اسلام پسند حلیف جماعت پر علاحدگی پسندوں نے ساحلی شہر میں ایک فوجی پریڈ پرحملے میں معاونت کا الزام عاید کیا۔ اس حملے میں کم سے کم 36 افراد مارے گئے تھے۔

ذرائع کا کہنا ہے کہ عدن میں جاری کشیدگی پر عرب لیگ نے بھی تشویش کا اظہار کیا ہے۔ ذرائع کے مطابق عرب لیگ کے جنرل سیکرٹری عدن میں کشیدگی پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔

عرب لیگ کی طرف سے عدن میں تمام متحارب فریقین سے تحمل سے کام لینے اور مصالحانہ طریقہ کار اپنانے پر زور دیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں