.

لیبیا : حفتر کی فوج کی وفاق کی فورسز کی ہمنوا ملیشیاؤں کے ٹھکانوں پر بم باری

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا میں خلیفہ حفتر کے زیر قیادت قومی فوج نے کہا ہے کہ اس کی فضائیہ نے منگل اور بدھ کی درمیانی شب دارالحکومت طرابلس میں وفاق کی حکومت کے زیر انتظام مسلح ملیشیاؤں کے ٹھکانوں پر شدید حملے کیے۔

اس سے قبل منگل کے روز فریقین کے بیچ جھڑپیں عروج پر پہنچ گئیں۔ دونوں جانب سے لڑائی کے محاذوں پر عسکری کمک پہنچنے کے بعد آئندہ گھنٹوں کے دوران جھڑپوں میں مزید اضافے کی توقع ہے۔

اس سلسلے میں وفاق کی حکومت کی فورسز نے دھمکی دی ہے کہ وہ معرکے کی کارروائی اپنے حق میں کر لیں گی۔ حالیہ پیش رفت کے تناظر میں لیبیا کے دارالحکومت میں سنگین نوعیت کی جنگی جارحیت کا قوی امکان ہے۔ دوسری جانب اقوام متحدہ سمیت بین الاقوامی سطح پر خبردار کیا جا رہا ہے کہ جنگی جارحیت کا ملک میں سیاسی عمل اور شہریوں کی سلامتی پر خطرناک اثر ہو گا۔

یہ زمینی صورت حال دارالحکومت طرابلس میں جنگ کے خاتمے کے مواقع اور فریقین کے سیاسی مذاکرات کی میز پر واپسی کے امکانات کی تاریک تصویر پیش کر رہی ہے۔ گذشتہ 4 ماہ سے زیادہ عرصے سے جاری جھڑپوں اور لڑائی میں ایک ہزار سے زیادہ افراد اپنی جانوں سے ہاتھ دھو چکے ہیں۔