'قطر نے صومالیہ میں 11 منصوبوں کے وعدے کیے مگر ان پر عمل درآمد نہیں کیا'

صومالی اپوزیشن جماعت کے رہ نما کی دوحا کی پالیسی پر تنقید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

افریقی ملک صومالیہ کے ایک سینیر سیاست دان اور اپوزیشن رہ نما عبدالرحمان عبدالشکور نے کہا ہے کہ قطر نے صومالیہ میں 11 منصوبوں کے لیے فنڈز فراہم کرنے کا اعلان کیا مگر دوحا کی طرف سے ان وعدوں پر عمل درآمد نہیں کیا گیا۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق صومالی اپوزیشن رہ نما نے ملک میں 'ھوبیو' بندرگاہ کے افتتاح پر بات کرتے ہوئے کہا کہ قطر نے پہلے بھی کئی منصوبے شروع کیے مگر ان پر عمل درآمد نہیں کیا گیا۔

خیال رہے کہ قطر نے حال ہی میں صومالیہ میں 'ھوبیو' بندرگاہ کے افتتاح کا اعلان کیا ہے۔ یہ بندرگاہ بحیر احمر کے ساحل پر غلم دغ ریاست میں قائم کی جائے گی۔ دوحا کی طرف سے یہ بیان ایک ایسے وقت میں سامنے آیا ہے جب دوسری طرف حال ہی میں صومالیہ میں دوحا کے سفیر اور قطری کاروباری شخصیت کے درمیان ٹیلیفونک کال لیک ہوئی تھی۔ لیک ہونے والی کال میں قطری سفیر نے اعتراف کیا تھا کہ صومالیہ کی بوصاصو بندرگاہ پر گذشتہ مئی کو قطر نے بم دھماکے کرائے تھے۔

صومالیہ میں قطری حکومت کی طرف سے سرمایہ کاری کے منصوبوں کے اعلان کے پچیھے دوحا کے سیاسی اور اقتصادی مقاصد کار فرما ہیں۔ قطر قرن افریقا میں اپنا سیاسی اثرو نفوذ بڑھانے کے لیے کوشاں ہے۔ قطر بحیرہ احمر اور باب المندب کے قریب تزویراتی اہمیت کے حامل علاقوں میں خصوصی طورپر اثرو رسوخ بڑھا رہا ہے۔'ھوبیو' کا علاقہ اور وہاں پر بندرگاہ بھی قطر کے لیے تزویراتی اہمیت کا حامل ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں