سوڈان : عمر البشیر آج پھر عدالت کے کٹہرے میں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

خرطوم میں معزول صدر عمر البشیر کے خلاف عدالتی کارروائی کے سلسلے میں آج ہفتے کے روز نئی سماعت کا انعقاد ہو رہا ہے۔ ان پر غیر ملکی کرنسی رکھنے اور بدعنوانی کے علاوہ احتجاج کنندگان کے قتل پر اکسانے اور اس میں ملوث ہونے کے الزامات ہیں۔

استغاثہ البشیر سے منی لانڈرنگ اور دہشت گردی کی فنڈنگ کے حوالے سے بھی پوچھ گچھ کی خواہاں ہے۔

عمر البشیر کو جنہوں نے 30 برس تک سوڈان پر حکم رانی کی ،،، پیر کے روز سخت عسکری پہرے میں عدالت پہنچایا گیا۔

دوسری جانب خود مختار کونسل کے رکن محمد حسن التعایشی نے جمعے کے روز ایک سیمینار میں انکشاف کیا کہ عمر البشیر، ان کے بھائیوں اور ان کی بیویوں نے سوڈانی دارالحکومت کے نواحی علاقے خرطوم بحری کی 11% اراضی ہتھیا رکھی تھی۔ اس کے علاوہ ملکی صدارت کے پاس 200 ادارے تھے جن کا بجٹ ریاست کے انتظامی ادارے کے بجٹ کے برابر تھا۔

التعایشی نے مزید کہا کہ ایندھن کی مد میں سپورٹ مستحق افراد کو ملنا چاہیے تا کہ سماجی انصاف کو یقینی بنایا جا سکے۔ انہوں نے واضح کیا کہ انقلابی تحریک کا مقصد اس نظام کی تبدیلی تھا جس نے سوڈان کو بدترین حالت میں پہنچا دیا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں