.

ایرانی تیل بردار جہاز کو کھیپ اتارنے نہیں دیں گے : بولٹن

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی قومی سلامتی کے مشیر جان بولٹن کا کہنا ہے کہ واشنگٹن ایران کو دہشت گردی کی فنڈنگ کرنے، دنیا کو عدم استحکام سے دوچار کرنے اور بین الاقوامی پابندیوں کی خلاف ورزیاں کرنے سے روکنے کا عزم رکھتا ہے۔

پیر کے روز اپنی ایک ٹویٹ میں انہوں نے کہا کہ ترکی کی جانب گامزن بحری جہاز "ایڈریان ڈاریا 1" پر لدی ہوئی تیل کی "غیر قانونی" کھیپ کو اتارے جانے سے روکا جانا چاہیے خواہ یہ بندرگاہ پر ہو یا پھر سمندر میں ہو۔

ایرانی تیل بردار جہاز "ایڈریان ڈاریا 1" (سابقہ نام گریس 1) جس کو جبل طارق کے حکام نے ایک ماہ سے زیادہ عرصے سے تحویل میں لے رکھا تھا، اس نے اعلان کیا ہے اب وہ اپنی منزل تبدیل کر کے ترکی کی سمت رواں دواں ہے۔

امریکی خبر رساں ایجنسی کے مطابق جہاز کے عملے نے ہفتے کو علی الصبح جہاز کے خود کار نظام میں مقررہ منزل کو تبدیل کر کے ترکی کی مسرین بندرگاہ کر دیا ہے۔ تاہم ایجنسی کا کہنا ہے کہ عملہ جہازکےAIS نظام میں کسی بھی منزل کو درج کر سکتا ہے لہذا ہو سکتا ہے کہ ترکی اس کی حقیقی منزل نہ ہو۔

جبل طارق کے حکام نے چار جولائی کو ایڈریان ڈاریا 1 کو تحویل میں لے لیا تھا۔ حکام کو شبہ تھا کہ یہ جہاز شام پر یورپی یونین کی پابندیوں کی خلاف ورزی کرتے ہوئے دمشق کو تیل پہنچانے کی کوشش کر رہا ہے۔

چند روز قبل امریکی وزارت خارجہ نے باور کرایا تھا کہ پیر کے روز جبل طارق کے ساحل سے روانہ ہونے والے تیل بردار جہاز (گریس 1) کی کسی بھی قسم کی معاونت کو "دہشت گرد تنظیموں" کی نظر سے دیکھا جا سکتا ہے۔