.

ترکی کا روس سے میزائل دفاعی نظام ایس-400 کے بعد اب لڑاکا جیٹ سخوئی کے حصول پر غور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ترکی روس سے میزائل دفاعی نظام ایس -400 خرید کرنے کے بعد اب اس سے لڑاکا جیٹ سخوئی 57 اور سخوئی 35 حاصل کرنے کے لیے بھی بات چیت کررہا ہے۔

روسی خبررساں ایجنسی کے مطابق فنی عسکری تعاون کی فیڈرل سروس کے سربراہ دمتری شوجائیف کا کہنا ہے کہ " ترکی نے روس سے لڑاکا جیٹ کے حصول میں دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ البتہ کسی حتمی سودے کے حوالے سے معاہدے کی بات کرنا قبل از وقت ہو گا کیوں کہ ابھی تک کوئی طلب سامنے نہیں آئی ہے اور اس سلسلے میں مشاورت کی ضرورت ہے"۔

رواں ماہ روس کے ایک سرکردہ عہدہ دار نے اعلان کیا تھا کہ امریکا کی جانب سے انقرہ کو اپنے ایف-35 لڑاکا طیاروں کے پروگرام سے الگ کر دینے کے بعد اُن کا ملک ترکی کو لڑاکا طیارے فروخت کرنے کو تیار ہے"۔

اس سے قبل امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی انتظامیہ نے روسی ساختہ ایس-400 فضائی دفاعی نظام خریدنے پر ترکی کو "ایف -35" لڑاکا طیاروں کے آلات کی تیاری کے پروگرام سے بے دخل کر دیا تھا۔

امریکا نے باور کرایا تھا کہ روسی دفاعی نظام امریکی لڑاکا طیاروں کے پروگرام کو کمزور کر دے گا۔