.

فلسطینی طالب علم کی امریکا میں حصول تعلیم کی مراد پوری ہوگئی!

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی طرف سے نامعلوم وجوہات کی بناء پر بے دخل کیے گئے ایک فلسطینی طالب علم کو امریکا کی ہارورڈ یونیورسٹی میں حصول تعلیم کا موقع مل گیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق چند روز قبل لبنان میں مقیم فلسطینی پناہ گزین لڑکے اسماعیل ھجاوی کو بوسٹن کے لوگان بین الاقوامی ہوائی اڈے سے واپس لبنان ڈیپورٹ کردیا گیا تھا۔ فلسطینی پناہ گزین لڑکے کو واپس بھیجے جانے کی وجہ معلوم نہیں ہوسکی تاہم اس واقعے نے امریکی انتظامیہ کے خلاف سوشل میڈیا پر تنقید کا ایک نیا دروازہ کھول دیا تھا۔

عالمی سطح پر تعلیم کے مواقع فراہم کرنے میں مدد کرنے والی تننظیم'امیڈیسٹ کے مطابق 17 سالہ فلسطینی لڑکا چند روز پیشتر لوگان کے بین الاقوامی ہوائی اڈے سےواپس لبنان بھیج دیا گیا تھا۔

عجاوی کے اہل خانہ کا کہنا ہے کہ حالیہ دس دن ہمارے لیے بہت پریشانی کے گذرے مگر ہمیں اس دوران ہزاروں پیغامات ملے جن میں ہمارے ساتھ یکجہتی کی گئی تھی۔ ہارورڈ یونیویورسٹی کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ اسماعیل ھجاوی کو جامعہ میں داخلہ مل گیا ہے اور اس نے منگل سے اپنی تعلیمی سفر کا آغاز کردیا ہے۔

امیڈیسٹ آرگنائزیشن کے چیئرمین ٹیوڈور قطوو کا کہنا ہے کہ ہمیں خوشی ہے کہ اسماعیل جاوی امریکا میں حصول تعلیم کے اپنے مشن اور خواب کو پورا کرنے میں کامیاب ہوگیا ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ اسماعیل ایک دمکتا ستار ہے اور اس نے تعلیمی میدان میں اپنی ذہانت سے کئی چیلنجز کامیابی کے ساتھ مکمل کیےہیں۔