.

الحدیدہ میں مسجد کے نزدیک حوثیوں کی گولہ باری، 11 یمنی شہری جاں بحق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یمن میں جمعے کے روز حوثی ملیشیا نے الحدیدہ صوبے میں قتل و غارت کا نیا بازار گرم کر دیا۔

مقامی ذرائع نے العربیہ ڈاٹ نیٹ کو بتایا کہ حوثیوں نے الحدیدہ کے جنوب میں حیس اور التحیتا کے ضلعوں میں شہریوں کے گھروں پر توپوں سے گولہ باری کی۔ اس کے نتیجے میں ابتدائی رپورٹ کے مطابق کم از کم 11 شہری جاں بحق اور 8 زخمی ہو گئے جن میں زیادہ تر بچے ہیں۔

طبی کارکنان کے مطابق حوثیوں نے رہائشی علاقے میں نماز جمعہ سے قبل ایک مسجد کے پڑوس میں واقع دو گھروں کو حملے کا نشانہ بنایا۔ اس کے سب مسجد میں نماز نہیں ہو سکی اور لوگ لاشوں اور زخمیوں کو اٹھانے میں مصروف ہو گئے۔

کارکنان کا کہنا ہے کہ التحیتا ضلع کے علاقے المتینہ میں دو خاندانوں سے تعلق رکھنے والے 9 یمنی شہری حوثیوں کی وحشیانہ گولہ باری کی لپیٹ میں آ گئے۔ ان کے علاوہ دو افراد شدید زخمی بھی ہوئے۔

اس کے علاوہ حوثی ملیشیا نے حیس ضلع کے جنوب میں السبعہ کے علاقے میں بھی قتل و غارت کا ارتکاب کیا۔ یہاں توپوں کی گولہ باری کے دوران ابتدائی رپورٹ کے مطابق دو بچے جاں بحق اور 4 زخمی ہو گئے۔

زمینی ذرائع کے مطابق حوثی ملیشیا نے جمعے کے روز الحدیدہ اور اس کے جنوب میں مختلف علاقوں میں گولہ باری اور جارحیت کا سلسلہ جاری رکھا۔

حوثی ملیشیا الحدیدہ سے متعلق اسٹاک ہوم معاہدے کی شقوں پر کسی طور عمل درامد پر تیار نہیں۔ حوثی باغی الحدیدہ میں فائر بندی اور عسکری کارروائیوں روکنے کے لیے اقوام متحدہ کی کوششوں کو سبوتاژ کرنے پر تُلے ہوئے ہیں۔