.

آرامکو کی تنصیبات پر حملہ بین الاقوامی قانون کی کھلی خلاف ورزی ہے : برطانیہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانیہ نے باور کرایا ہے کہ سعودی آرامکو کی تیل تنصیبات پر ڈرون حملے ایک خطرناک اور شرم ناک فعل ہیں۔

پیر کے روز برطانوی وزیر خارجہ ڈومینیک راب نے ایک بیان میں کہا ہے کہ یہ حملہ "بین الاقوامی قانون کی کھلی خلاف ورزی" ہے۔برطانیہ اس موقع پر پوری قوت کے ساتھ سعودی عرب کے ساتھ کھڑا ہے۔ راب کے مطابق "حملے کے ذمے دار کے حوالے سے تصویر واضح نہیں ہے۔میں چاہتا ہوں کہ ہمارے سامنے مکمل طور پر واضح تصویر ہو اور ایسا جلد ہو گا"۔

برطانوی وزیر خارجہ کا کہنا ہے کہ "یہ حملہ سعودی عرب اور اس کی تیل کی تنصیبات کے حوالے سے نہایت خطرناک ہے۔تیل کی عالمی منڈیوں اور ترسیلات پر اس کے اثرات مرتب ہوں گے۔اس حوالے سے ہمارے سامنے ایک واضح اور یکساں بین الاقوامی جواب ہونا چاہیے تا کہ اس رجحان پر روک لگائی جا سکے"۔

عرب دنیا اور عالمی برادری نے سعودی آرامکو کی تنصیبات پر شدید ردعمل کا اظہار کیا ہے اور اس جارحانہ عمل کو یکسر مسترد کر دیا ہے۔

یورپی یونین نے مشرق وسطیٰ میں "علاقائی امن کے لیے حقیقی خطرے" سے خبردار کیا ہے۔ یورپی یونین کی خارجہ پالیسی کی سربراہ فیڈریکا مغرینی نے ایک بیان میں کہا کہ "آرامکو کی تیل کی دو تنصیبات پر حملہ حقیقی طور پر خطے کے امن کے لیے خطرہ ہے"۔