.

سعودی عرب نے ضائع ہونے والے تیل کا ایک تہائی دوبارہ حاصل کر لیا:وال اسٹریٹ جرنل

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی اخبار'وال اسٹریٹ جرنل' نے دعویٰ کیا ہے کہ سعودی عرب نے ہفتے کے روز تیل تنصیبات پرحملوں کے نتیجے میں ضائع ہونے والے تیل کا ایک تہائی دوبارہ حاصل کرنے میں کامیابی حاصل کرلی ہے۔

انڈسٹری کے ایک ذرائع نے اتوار کے روز 'رائٹرز' کو بتایا کہ سعودی عرب کی خام برآمدات رواں ہفتے کی طرح جاری رہیں گی کیونکہ مملکت اپنی ذخیرہ شدہ تیل عالمی منڈی کو تیل کی فروخت جاری رکھے ہوئے ہے۔

'رائٹرز' نے وال اسٹریٹ جرنل کے حوالے سے بتایا ہے کہ سعودی عرب کا مقصد پیر تک کھوئے ہوئے تیل کی پیداوار کا ایک تہائی بحال کرنا ہے۔

اخبار نے ایک سعودی عہدیدار کے حوالے سے کہا ہے'ہم محتاط ہیں کہ جب تک ہم پیداوار کو مکمل طور پر بحال نہ کریں تب تک مارکیٹ میں کسی قسم کی کمی نہیں آنی چاہیے۔

'رائٹرز' نے اسٹینڈرڈ اینڈ پورزگلوبل پلاٹس' کے حوالے سے بتایا کہ سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر حملوں کے بعد مشرق وسطی میں صورت حال ایک نئی سطح پر جا رہی ہےجس سے توانائی کے تحفظ کے بارے میں خدشات پیدا ہوئے ہیں۔

ہفتے کے روز سعودی تیل کی دو تنصیبات پر حملے نے ریاست کی آدھی سے زیادہ پیداوار یا 5 فیصد سے زیادہ عالمی رسد کو روک دیا ہے۔

سعودی عرب کے وزیر توانائی شہزادہ عبدالعزیز بن سلمان نے کہا کہ ارامکو تیل کی ضائع ہونے والی پیداوار کو جلد بحال کرے گی۔ ان کا کہنا تھا کہ خریص اور بعقیق تیل تنصیبات پر حملے کے بعد اڑتالیس گھنٹوں میں نئی معلومات فراہم کرے گا۔

وزیر توانائی نے کہا کہ ابتدائی تخمینے سے یہ معلوم ہوتا ہے کہ روزانہ تیل کی روزانہ 5.7 ملین بیرل کی پیداوار یا ارمکو کی پیداوار کا تقریبا 50 فیصد پیداوار متاثر ہوئی ہے۔