.

سعودی عرب اور آرامکو نے ڈرون حملے کے بعد چیلنج پر قابو پالیا:سیکریٹری جنرل اوپیک

سعودی عرب اس ایشو پر بالکل شفاف ہے،اس لیے اوپیک کا کوئی ہنگامی اجلاس بلانے کی ضرورت نہیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

تیل برآمد کرنے والے ملکوں کی تنظیم ( اوپیک) کے سیکریٹری جنرل محمد سنوسی بارکیندو نے کہا ہے کہ سعودی عرب اور آرامکو نے ڈرون حملوں سے پیدا ہونے والے چیلنج پر قابو پالیا ہے۔ انھوں نے سعودی آرامکو کی تیل تنصیبات پر ڈرون حملے کے بعد پیدا شدہ ناگہانی صورت حال سے احسن انداز میں نمٹنے پر سعودی عرب کے کردار کو سراہا ہے۔

اوپیک کے سربراہ نے بلومبرگ سے ایک ٹیلی فونک انٹرویو میں کہا کہ ’’سعودی حکام اورآرامکو نے جس طرح حملوں کے بعد صورت حال قابو پایا ہے،اس کی تعریف کی جانی چاہیے۔‘‘

انھوں نے کہا کہ ’’ سعودی حکام ہمارے اور دوسرے ممالک سے رابطے میں ہیں اور صورت حال مجموعی طور پر کنٹرول میں ہے۔‘‘

انھوں نے واضح کیا کہ’’سعودی عرب اس معاملے میں بالکل شفاف ہے۔اس لیے (پیداشدہ نئی صورت حال پر غور کے لیے) اوپیک کا کوئی ہنگامی اجلاس بلانے کی ضرورت نہیں ہے۔‘‘

بارکیندو کا کہنا تھا’’ سعودی عرب مضبوط ہے اور وہ اپنے تمام صارفین کو تیل کی سپلائی جاری رکھنے کے لیے پختہ عزم رکھتا ہے۔‘‘