.

ایران خطے کو عدم استحکام سے دوچار کرنا چاہتا ہے: امریکی سینیٹر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی سینیٹ کی خارجہ تعلقات کمیٹی کے ریپبلکن چیئرمین سینیٹر جم رش نے پیر کو سعودی تیل کی تنصیبات پر حملے کے بعد ایرانی حکومت کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا ہےکہ 'ایران کی مشرق وسطی میں عدم استحکام پیدا کرنا چاہتا ہے'۔

رش نے یہ بھی انتباہ کیا کہ امریکی افواج پر کوئی بھی حملہ ممکن ہے۔ بیرون ملک تعینات امریکی فوجیوں پر کسی بھی حملے کا بھر پور جواب دینا ہوگا۔ آپشن زیرغور ہیں۔

قبل ازیں امریکی وزیر دفاع مارک ایسپر نے پیر کے روز کہا کہ سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر غیرمعمولی حملے کے بعد امریکہ اپنے اتحادیوں کے ساتھ مل کر کام کرنے کے لیے تیار ہیں۔

انہوں نے ٹویٹر پر لکھا کہ وہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ اور دیگر اعلی عہدیداروں کے ساتھ صورتحال کا جائزہ لینے کے لیے ہاؤس میں ایک اجلاس میں شریک ہوئے تھے۔

ٹرمپ نے اتوار کے روز کہا تھا کہ وہ حملوں کے ذمہ داروں کو "جواب دینے کے لیے تیار ہیں"۔

انہوں نے زور دے کر کہا کہ امریکی فوج اس "غیر معمولی حملے" کا جواب دینے کے لئے امریکی "اتحادیوں" کے ساتھ مل کر کام کر رہی ہے۔ ان حملوں کی وجہ سے دنیا کے سب سے بڑے تیل برآمد کنندہ کی پیداوار متاثر ہوئی ہے

امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے ہفتے کے روز ایران پر حملوں کا ذمہ دار قرار دیتے ہوئے کہا کہ اس بات کا کوئی ثبوت نہیں ہے کہ یہ حملے یمن سے کیے گئےہیں۔