.

روس اوپیک اور غیراوپیک ممالک کے درمیان سمجھوتے پر عمل درآمد کے لیے پُرامید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس نے اس توقع کا اظہار کیا ہے کہ تیل برآمد کرنے والے ملکوں کی تنظیم اوپیک اور غیراوپیک ممالک کے درمیان عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں استحکام کے لیے سمجھوتے پر عمل درآمد جاری رکھا جائے گا۔

یہ بات روسی صدر ولادی میر پوتین نے اوپیک کے سیکریٹری جنرل محمد بارکیندو سےملاقات میں گفتگو کرتے ہوئے کہی ہے۔انھوں نے کہا کہ سعودی عرب میں تیل کی تنصیبات پر حالیہ حملوں کے بعد عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتیں دوبارہ موجودہ سطح پر لوٹ آئی ہیں کیونکہ مارکیٹ میں تیزی سے اتارچڑھاؤ کی کوئی بنیاد نہیں تھی۔انھوں نے اس ضمن میں روس اور اوپیک کے رکن ممالک کی کاوشوں کا ذکر کیا ہے۔

ماسکو میں دنیا بھر سے تعلق رکھنے والے توانائی کے لیڈروں کا اجلاس ہوا ہے۔ایک ہفتے تک جاری رہنے والے اس اجلاس میں عالمی توانائی کے منظرنامے سے لے کر قابل تجدید توانائی کی ترقی میں درپیش چیلنجز تک ایسے امور پرغور کیا گیا ہے۔

روس کے وزیرتوانائی الیگزینڈر نوواک نے قبل ازیں اس اجلاس میں کہا کہ ان کا ملک گذشتہ سال اکتوبر میں اوپیک اور غیر اوپیک ممالک کے درمیان طے شدہ سمجھوتے کی مکمل پاسداری کررہا ہے۔

انھوں نے کہا کہ فی الوقت تیل مارکیٹ کے بارے میں کوئی پیشین گوئی کرنا مشکل ہے اور توانائی کی مارکیٹ کی صورت حال سے نمٹنے کے لیے مربوط کوششوں کی ضرورت ہے۔