.

شام میں ترک فوج کی کارروائی سے شہریوں کو نقصان پہنچے گا: یورپی یونین کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یورپی یونین نے خبردار کیا ہے کہ شام کے شمال مشرقی علاقے میں ترکی کی کرد ملیشیا کے خلاف فوجی کارروائی سے شہریوں کو نقصان پہنچے گا اور اس کے نتیجے میں علاقے کے عوام بڑی تعداد میں دربدر ہوسکتے ہیں۔

یورپی یونین کی خاتون ترجمان ماجا کوچی جانچیک نے سوموار کے روز برسلز میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ’’شام کے شمال مشرق میں نئی فوجی کارروائیوں سے نہ صرف شہریوں کے مصائب میں اضافہ ہوگا اور وہ بڑے پیمانے پر دربدر ہوں گے بلکہ اس سے موجودہ سیاسی کوششوں کو بھی شدید نقصان پہنچے گا۔‘‘

دوسری جانب ترک وزیر خارجہ مولود شاوش اوغلو نے کہا ہے کہ ان کا ملک شام کے ساتھ سرحد کو محفوظ بنانے کے لیے پُرعزم ہے۔اس سے پہلے وائٹ ہاؤس نے ایک بیان میں کہا تھا کہ ترکی شمالی شام میں بہت جلد فوجی کارروائی شروع کرنے والا ہے۔