.

سوڈان کوسعودی عرب اور یواے ای کی موعودہ تین ارب ڈالر کی امداد میں سے نصف وصول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سوڈان کو سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی موعودہ تین ارب ڈالر کی امداد میں سے نصف وصول ہوگئی ہے اور باقی رقم اور امدادی سامان آیندہ سال کے اختتام تک مل جائے گا۔

سوڈانی وزیرخزانہ ابراہیم البداوی نے ایک بیان میں کہا ہے کہ سعودی عرب اور یو اے ای نے سوڈانی سنٹرل بنک میں پچاس کروڑ ڈالر منتقل کر دیے ہیں جبکہ ایک ارب ڈالر مالیت کی پیٹرولیم مصنوعات ، گندم اور زرعی اجناس پہلے ہی سوڈان کو منتقل کی جاچکی ہے۔

ان دونوں ممالک نے اپریل میں سابق مطلق العنان صدر عمر حسن البشیر کی عوامی تحریک کے نتیجے میں برطرفی کے بعد سوڈان کی معیشت کو سنبھالا دینے کے لیے تین ارب ڈالر مالیت کے امدادی پیکج کا اعلان کیا تھا۔

البداوی نے کہا کہ ’’میں نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کے سفیروں سے ملاقات کی ہے۔ہم نے ایک پروگرام کے شیڈول سے اتفاق کیا ہے۔ان شاء اللہ یہ 2020ء کے اختتام تک مکمل ہوگا اورتب تک باقی گرانٹ وصول ہوجائے گی۔‘‘

وہ ابو ظبی میں ایک تقریب کے موقع پر گفتگو کررہے تھے۔سوڈانی وزیراعظم عبداللہ حمدوک بھی وہیں موجود تھے۔ انھوں نے اس سے پہلے الریاض کا دورہ کیا تھا جہاں انھوں نے سعودی فرماں روا شاہ سلمان بن عبدالعزیز سے ملاقات کی تھی۔

سوڈان کی خود مختار عبوری کونسل کے صدر جنرل عبدالفتاح البرہان اور دوسرے اعلیٰ عہدے دار بھی خلیجی ممالک کے اس دورے میں وزیراعظم کے ہمراہ تھے۔

وزیر خزانہ ابراہیم البداوی نے ستمبر میں ایک نوماہی اقتصادی منصوبے کا اعلان کیا تھا۔اس کا مقصد افراطِ زر کی بڑھتی ہوئی شرح پر قابو پانا اور جون 2020ءتک روٹی اور پیٹرول پر شہریوں کو زرتلافی دینے کا سلسلہ جاری رکھا جائے گا۔