.

ترکی کی سرحد پر ایران کی "خفیہ" فوجی مشقیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایرانی طلبہ کی خبر رساں ایجنسی ISNA نے بدھ کے روز بتایا ہے کہ ایرانی فوج نے ملک کے شمال مغرب میں ترکی کے ساتھ سرحد پر غیر اعلانیہ فوجی مشقوں کا آغاز کر دیا ہے۔

مشقوں کا آغاز ایسے وقت میں ہوا ہے جب ترکی کی فورسز ایک فوجی آپریشن کے لیے شام میں داخل ہونے کی تیاریاں مکمل کر چکی ہیں۔

مذکورہ خبر رساں ایجنسی کے مطابق اس مشق میں ریپڈ ایکشن یونٹس اور دیگر بریگیڈز کے علاوہ زمینی افواج کے فضائی یونٹ کے زیر انتظام ہیلی کاپٹرز بھی شریک ہیں۔

یاد رہے کہ سیرین ڈیموکریٹک فورسز (ایس ڈی ایف) نے بدھ کو علی الصبح بین الاقوامی اتحاد سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ اپنے زیر کنٹرول علاقوں میں فضائی حدود پر پابندی لگا دے۔ یہ مطالبہ ترکی جانب سے شام کی سرحد پر بھاری پیمانے پر عسکری کمک مع کرنے کے بعد سامنے آیا۔

ایس ڈی ایف کے کوآرڈی نیشن اینڈ ملٹری آپریشنز سینٹر نے اپنے سرکاری اکاؤنٹ پر بدھ کی صبح کی گئی ٹویٹ میں کہا کہ "شمال مشرقی شام میں لوگوں کو انسانی بحران سے بچانے کے لیے ہم بین الاقوامی اتحاد اور عالمی برادری سے اپیل کرتے ہیں کہ وہ علاقے میں ہوابازی پر پابندی عائد کر دیں"۔