.

لیبیا : حفتر کی فوج کے ہاتھوں ترکی کا آپریشنز روم تباہ ، دو انجینئرز ہلاک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا میں (جنرل خلیفہ حفتر کی) قومی فوج نے پیر کے روز اعلان کیا کہ دارالحکومت طرابلس میں ایک فوجی ٹھکانے پر فضائی حملے میں ترکی کا ڈرون طیاروں کا کنٹرول روم تباہ ہو گیا۔ اس کے نتیجے میں دو ترک انجینئرز اور کئی پہرے دار اپنی جانوں سے ہاتھ دھو بیٹھے۔

لیبیا کی فوج کے الکرامہ آپریشن روم کے میڈیا سینٹر کی جانب سے جاری بیان میں نشانہ بنائے گئے ٹھکانے کا انکشاف نہیں کیا گیا۔

یاد رہے کہ لیبیا کے لیے اقوام متحدہ کے ایلچی غسان سلامہ کئی روز سے اس امید کا اظہار کر رہے ہیں کہ آئندہ ماہ ہونے والی بین الاقوامی کانفرنس کے نتیجے میں سلامتی کونسل کی جانب سے ایک قرارداد جاری کر دی جائے گی۔ اس قرارداد میں لیبیا پر عائد ہتھیاروں کی پابندی کے نفاذ کے واسطے ایک فوری طریقہ کار وضع کیا جائے گا۔

جرمنی کی طرف سے منعقد کی جانے والی یہ کانفرنس چھ ماہ سے جاری لڑائی کے خاتمے کے لیے پہلی بڑی سفارتی کوشش ہے۔ کانفرنس میں مرکزی بیرونی کھلاڑیوں کو اکٹھا کیا جا رہا ہے تا کہ اقوام متحدہ کی جانب سے عائد کردہ ہتھیاروں کی پابندی کی خلاف ورزیوں کو روکا جا سکے اور فائر بندی اور ایک نئے سیاسی عمل کی پابندی کو یقینی بنایا جائے۔

غسان سلامہ کے مطابق وہ لیبیا میں جنگ کو ختم کرنے کے ارادے کے حوالے سے واضح طور پر اظہار کی توقع رکھتے ہیں اور یہ اظہار اقوام متحدہ کی جانب سے وضع کیے گئے ایک طریقہ کار کی صورت میں ہونا چاہیے۔