.

امریکی کانگرس کے ڈیموکریٹک ارکان کا ایردوآن کا واشنگٹن کا دورہ منسوخ کرنے کا مطالبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں ڈیموکریٹک سینیٹر جین شیہن نے امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے مطالبہ کیا ہے کہ وہ آئندہ ماہ ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن کا واشنگٹن کا دورہ منسوخ کر دیں۔ اس سے قبل ڈیموکریٹک پارٹی کے دو سینیٹرز کرس مرفی اور وین ہولن بھی یہ مطالبہ کر چکے ہیں۔

ترک ایوان صدارت نے رواں ماہ کے دوران اعلان کیا تھا کہ ایردوآن کی ٹرمپ کے ساتھ ٹیلیفون پر بات چیت ہوئی ہے۔ بات چیت میں ایردوآن نے ٹرمپ کی دعوت پر آئندہ ماہ واشنگٹن میں امریکی صدر سے ملاقات پر آمادگی کا اظہار کیا۔

ترکی اور اس کے ہمنوا شامی اپوزیشن کے مسلح گروپوں نے بدھ کے روز شمال مشرقی شام میں کرد فورسز کے خلاف حملے کا آغاز کیا تھا۔

انقرہ اس بات کا خواہاں ہے کہ وہ شام میں 32 کلو میٹر اندر اپنے زیر کنٹرول ایک سیف زون کا قیام عمل میں لائے اور پھر ترکی میں موجود 36 لاکھ شامی پناہ گزینوں کے ایک بڑے حصے کو وہاں منتقل کر دیا جائے۔

اقوام متحدہ کا کہنا ہے کہ ایک ہفتہ قبل شروع کیے گئے ترک فوجی آپریشن کے سبب اب تک تقریبا 1.3 لاکھ افراد متاثرہ علاقوں سے نقل مکانی کر چکے ہیں۔

دوسری جانب شام میں کرد خود مختار انتظامیہ نے اتوار کے روز ایک اعلان میں بتایا کہ شامی حکومت کے ساتھ ایک سمجھوتا طے پا گیا ہے۔ اس کے تحت بشار کی فوج ترکی کے ساتھ سرحد پر تعینات ہو گی تا کہ کردوں کے زیر کنٹرول علاقوں پر جاری حملے کو روکا جا سکے۔

کردوں کو سیرین ڈیموکریٹک فورسز کی ریڑھ کی ہڈی شمار کیا جاتا ہے۔ شام کے شمال اور شمال مشرق میں وسیع علاقوں سے داعش تنظیم کے قلع قمع کے بعد سیرین ڈیموکریٹک فورسز نے شام کے تقریبا 30% رقبے کا کنٹرول حاصل کر لیا تھا۔