.

سعودی آرٹسٹ نے ویران گھروں کو خوبصورت فن پاروں سے آباد کردیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب میں ایک آرٹسٹ نے اپنی فنکارانہ خداداد صلاحیت کو کاغذ سے ویران اور غیرآباد گھروں کی دیواروں پر منتقل کرکے اپنے فن کو ایک نئی جہت سے روشناس کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ سے بات کرتے ہوئے سعودی آٹسٹ نے کہا کہ پانچ سال قبل اس نے اپنے فن اور ذوق خاکہ نویسی کی تسکین کے لیے ویران گھروں کے درو دیواروں پراپنے فن کا مظاہرہ کرنا شروع کیا۔ اس کا یہ فن طائف کے نواحی گائوں 'کلاخ' کی نسبت سے اسی نام سے مشہور ہوا۔ اس کا کہنا تھا کہ عوام الناس کی طرف سے اسے غیر معمولی پذیرائی ، تعاون اور حوصلہ افزائی ملی۔ اس نے ویران عمارتوں کی دیواروں پر مختلف خاکے، تصاویر اور دیگر پینٹنگز بنانا شروع کیں اور دیواروں کو اپنے خیالات کے اظہار کا ذریعہ بنا لیا۔ آغاز میں مشہور کارٹون کردار ایسپنگ باب کی ڈرائنگ بنائی، جس کے بعد میں دیواروں اور عمارتوں کے اندرونی حصوں میں پینٹنگ کی۔

میں نے مشاہیر آرٹسٹوں سے ملاقاتوں میں اپنے فن سے متعلق ہر وہ بات پوچھی جو میں نہیں جانتا تھا۔ میں نے وال چاکنگ کے فن کے بارے میں جان کاری حاصل کی۔ اس دوران میری ملاقات ڈانٹے، رونی اور ٹرانز جیسے آرٹسٹوں سے ہوئی۔ اس کے بعد میں نے تبوک، الریاض اور ابھا میں ویران گھروں کے اندر فن پارے تیار کرنا شروع کر دیے۔

کلاخ نے آرٹ کے ایک مقابلے میں بھی حصہ لیا اور اس میں تیسری پوزیشن حاصل کی۔ اس کا کہنا ہے کہ وہ اپنے فن کے سفرکو مزید بہتر کرنے اور اسے منفرد بنانے کے لیے دن رات کوششیں جاری رکھے ہوئے ہے۔