.

چین کا 'آرامکو' کے حصص میں پانچ سے 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری پرغور

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بلومبرگ نے باخبر ذرائع کے حوالے سے بتایا کہ چینی سرکاری اداروں اور سعودی عرب کی سب سے بڑی پٹرولیم کمپنی آرامکو کے درمیان آرامکو کی ابتدائی عوامی پیش کش میں 5 ارب سے 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری کرنے پر بات چیت جاری ہے۔ ذرائع کے مطابق چین آرامکو کے آئی پی اوز میں پانچ سے 10 ارب ڈالر کی سرمایہ کاری پرغور کر رہا ہے۔

بلومبرگ کی رپورٹ کے مطابق آرامکو کے حصص کی بولی لگانے میں شامل فریقین میں بیجنگ میں واقع سلک روڈ فنڈ، سرکاری پٹرولیم کمپنی سینو پیک اور چین انویسٹمنٹ کارپوریشن کی خودمختار دولت فنڈ شامل ہیں۔

پورٹ میں مزید کہا گیا ہے کہ آرامکو کے حصص میں چینی سرمایہ کاری کے حجم کے بارے میں کوئی حتمی فیصلہ نہیں کیا گیا۔ سرمایہ کاری کے حجم اور دیگر امور کے بارے میں آخری فیصلہ چینی حکومت کی ہدایت پر کیا جائےگا۔

آرامکو نے اتوار کے روز اپنا آئی پی او لانچ کیا ہے۔ سعودی آئل کمپنی آرامکو اسٹاک مارکیٹ میں اترنے کا فیصلہ کر چکی ہے۔ اس حوالے سے مقامی سطح پر بھی سرمایہ کاری کی جائے گی۔

دوسری جانب آرا مکو، سلک روڈ فنڈ، سینو پیک یا چین انویسٹمنٹ کارپوریشن نے ابھی تک بلومبرگ کی رپورٹ پر کوئی تبصرہ نہیں کیا۔

باخبر ذرائع نے "العربیہ" کو بتایا کہ ہ گیارہ دسمبر کو سعودی مارکیٹ میں آرمکو کے شیئرز کا کاروبار شروع کرنے کی توقع ہے۔ آرامکو کے آئی پی او میں پیشکشوں سے کی جانے والی قیاس آرائیوں کے دوران رائیٹرز کو بتایا گیا کہ حکومت آرامکو کا دو فی صد نجی اداروں کی سرمایہ کاری کے لیے مختص کرنے کا امکان ہے۔

باخبر ذرائع نے رائیٹرز کو یہ بھی بتایا کہ سعودی حکومت آئی پی او کے بعد آرامکو سے اضافی حصص کی فروخت پر ایک سال کی پابندی عاید ہو گی۔