.

سعودی آرامکو 0.5 فی صد حصص چھوٹے سرمایہ کاروں کو فروخت کے لیے پیش کرے گی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی آرامکو نے اپنے حصص کی پہلی مرتبہ مارکیٹ میں فروخت کے لیے 600 صفحات کو محیط پراسپیکٹس جاری کردی ہے۔اس کے مطابق ابتدا میں نصف (0.5) فی صد حصص پرچون سرمایہ کاروں کو فروخت کے لیے پیش کیے جائیں گے۔

ذرائع نے العربیہ کو بتایا ہے کہ کمپنی پہلے مرحلے میں سعودی عرب کی مارکیٹ میں دو فی صد حصص جاری کرنے کا ارادہ رکھتی ہے۔سعودی عرب نے کمپنی کے اثاثوں کی مالیت کا تخمینہ بیس کھرب ڈالر لگایا ہے جبکہ تجزیہ کاروں اور سرمایہ کار بنکوں کے مطابق اس کی مالیت دس کھرب بیس ارب ڈالر سے بیس کھرب تیس ارب ڈالر کے درمیان ہوگی۔

واضح رہے کہ آرامکو دنیا کی سب سے زیادہ منافع کمانے والی کمپنی ہے۔اس کا کہنا ہے کہ اداروں اور کارپورٹ سرمایہ کاروں کے لیے حصص کی فروخت کا عمل 17 نومبر سے شروع ہوگا اور یہ چار دسمبر تک جاری رہے گا۔ پرچون سرمایہ کار17نومبر سے 28 نومبر تک حصص خرید کرسکیں گے۔

پراسپیکٹس میں جن نمایاں مالیاتی اداروں کے ذریعے آرامکو کے حصص فروخت کیے جائیں گے،ان کے نام دیے گئے ہیں۔ ان میں جے پی مورگن ، بوفا میرل لینچ ،مورگن اسٹینلے ، الراجحی کیپٹل اور فرسٹ ابوظبی بنک شامل ہیں۔

اس میں حصص کی فروخت کے قواعد وضوابط بھی بیان کیے گئے ہیں اور حصص داران آرامکو کے حصص پہلی مرتبہ خرید کرنے کے بعد 12 مہینے کے عرصے میں انھیں آگے فروخت نہیں کرسکیں گے۔ البتہ وہ کسی غیر ملکی حکومت یا اس سے وابستہ کسی تزویراتی حصص دار کو ان کی فروخت کرسکیں گے۔

آرامکو سعودی عرب کی وزارت توانائی کو خدمات اور مطالعات کی مد میں سالانہ 10 کروڑ ڈالر ادا کرے گی۔اس نے وضاحت کی ہے کہ عالمی مارکیٹ میں تیل کی قیمتوں میں اتار چڑھاؤ اور مستقبل میں رونما ہونے والے اقتصادی اور سیاسی واقعات کے اثرات حصص کی قدر اور کمپنی کی مالی پوزیشن پر مرتب ہوسکتے ہیں۔

آرامکو نے گذشتہ ہفتے حصص کی سعودی عرب میں فروخت کا عمل شروع کیا تھا۔آرامکو کے چئیرمن اور سعودی عرب کے پبلک انویسٹمنٹ فنڈ کے گورنر یاسرالرمیان نے العربیہ سے خصوصی گفتگو کرتے ہوئے کہا تھا کہ ’’آرامکو میں سرمایہ کاری دنیا میں کہیں سے بھی ہوگی۔‘‘

سعودی عرب کی کیپٹل مارکیٹ اتھارٹی (سی ایم اے) نے اگلے روز سعودی آرامکو کے حصص کی ابتدائی فروخت کی منظوری دی تھی۔سعودی آرامکو اپنے پانچ فی صد حصص ابتدائی طور پر فروخت کے لیے پیش کررہی ہے اور اس کو توقع ہے کہ اس طرح اس کو 100ارب ڈالر کی رقم حاصل ہوجائے گی۔

کمپنی سعودی اسٹاک مارکیٹ تداول میں 2019 کے اختتام سے قبل ایک فی صد حصص فروخت کے لیے پیش کرے گی اور ایک فی صد حصص آیندہ سال فروخت کے لیے پیش کرے گی۔اس کے بعد 2020ء اور 2021ء میں بین الاقوامی مارکیٹ میں آرامکو کے حصص فروخت کے لیے پیش کیے جائیں گے۔

ذرائع نے العربیہ کو بتایا تھا کہ سعودی آرامکو کا 11 دسمبر کو سعودی اسٹاک ایکس چینج (تداول) میں اندراج کیا جائے گا۔سعودی عرب بین الاقوامی مارکیٹوں میں بھی آرامکو کا اندراج چاہتا ہے۔سعودی کیپٹل مارکیٹ اتھارٹی میں حصص کی قیمتوں کے تعیّن کا آغاز 17نومبر سے کیا جائے گااور حتمی قیمت کا چار دسمبر کو اعلان کیا جائے گا۔

آرامکو کی حصص کی فروخت سے حاصل ہونے والی رقم کو سعودی عرب کے خود مختار فنڈ میں جمع کرایا جائے گا اور اس کو سعودی عرب کے ویژن 2030ء پروگرام پر خرچ کیا جائے گا۔اس پروگرام کا مقصد سعودی عرب کی معیشت کو متنوع بنانا اور تیل کی آمدن پر انحصار کم کرنا ہے۔

سعودی آرامکو نے 2018ء میں 111ارب 10 کروڑ ڈالر کا منافع حاصل کیا تھا اور 2019ء کے پہلے نو ماہ میں 68 ارب ڈالر کے منافع کی اطلاع دی ہے۔اس طرح یہ دنیا میں سب سے منافع بخش کمپنی ہے۔