.

ترکی میں 17 ہزار مظلوم جیلوں میں پڑے ہوئے ہیں : تُرک باسکٹ بال کھلاڑی انیس کینتر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا میں سکونت پذیر باسکٹ بال کے تُرک کھلاڑی انیس کینتر نے ترکی کے صدر رجب طیب ایردوآن کو ایک " آمر" قرار دیا ہے۔ منگل کے روز العربیہ نیوز چینل سے بات چیت میں انہوں نے کہا کہ اس وقت اُن کے ملک میں کسی قسم کی آزادی نہیں ہے۔ کینتر کے مطابق ایردوآن اپنے اختیارات کو انسانی حقوق پر بندش لگانے کے لیے استعمال کر رہے ہیں۔ انہوں نے تصدیق کی ہے کہ ترکی میں 17 ہزار کے قریب مظلوم افراد جیل میں پڑے سڑ رہے ہیں اور ایک لاکھ ہزار سے زیادہ بچے جیلوں میں پروان چڑھ رہے ہیں کیوں کہ ان کی مائیں گرفتار ہیں۔

امریکی کانگرس آمد کے موقع پر انیس کینتر نے امریکی ایوان نمائندگان کے کئی ارکان سے بات چیت کی جو ایردوآن کے واشنگٹن کے دورے کو مسترد کر رہے ہیں۔ کینتر کے مطابق وہ امریکا میں پروفیشنل باسکٹ بال لیگ(NBA) کے شگر گزار ہیں جس نے انہیں ان امور پر گفتگو کرنے کا موقع فراہم کیا تا کہ وہ اُن بے قصور لوگوں کی زبان بن جائیں جو اپنے دل کا مدعا بیان نہیں کر سکتے۔

یاد رہے کہ ترکی کے صدر ایردوآن واشنگٹن میں واقع ایک ہوٹل میں اپنی قیام گاہ پہنچ چکے ہیں۔ وہ آج بدھ کے روز امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ سے ملاقات کریں گے۔ امریکا میں بالخصوص ایوان نمائندگان کے ارکان کی جانب سے ایردوآن کے حالیہ دورے کی مخالفت سامنے آئی ہے۔

کینتر نے اپنی گفتگو میں امریکی صدر ٹرمپ کو مخاطب کرتے ہوئے کہا کہ "آپ کل ایک آمر سے ملاقات کرنے والے ہیں"۔

اس موقع پر انیس کینتر نے اپنے زیر قیادت (You Are My Hope)کے عنوان سے جاری مہم کا بھی ذکر کیا۔ اس مہم کا مقصد دس لاکھ افراد کے دستخط جمع کرنا ہے۔ بعد ازاں مہم کے منتظمین دستخطوں کی اس دستاویز کو لے کر وائٹ ہاؤس، اقوام متحدہ اور اس کے زیر انتظام انسانی حقوق کی کونسل کا رخ کریں گے۔

ترکی پر امریکی پابندیاں عائد کرنے کے امکان کے حوالے سے سوال پر انیس کینتر کا کہنا تھا کہ کانگرس کے لیے بہترین آپشن یہ ہے کہ وہ اُن کی مذکورہ مہم میں مدد کرے کیوں کہ یہ مہم اور دستاویز انقرہ، ایردوآن، ان کے اہل خانہ اور ان کی دولت پر پابندیاں عائد کرنے کی عوامی منظوری کی حیثیت رکھتی ہے۔

کینتر نے باور کرایا کہ ترکی میں بہت سے لوگوں کو تشدد، اذیت رسانی اور آبرو ریزی کا سامنا ہے۔ انہوں نے شام میں ترکی کا حملہ روک دینے کی اہمیت پر زور دیا۔ کینتر کے مطابق ترکی کو داعش تنظیم کے عناصر کے ساتھ تعاون کا سلسلہ روکنا ہو گا تا کہ متعدد شہریوں کو بچایا جا سکے ،،، مرد ، خواتین اور بچے جو وہاں موت کے منہ میں جا رہے ہیں۔

دو سال قبل ایردوآن نے انیس کینتر کی گرفتاری کے احکامات جاری کیے تھے۔ امریکی(FBI) کے مطابق اس نے امریکا میں اس تُرک کھلاڑی کو تحفظ فراہم کرنے کی کوشش کے طور پر اپنے احتیاطی اقدامات کو بڑھا دیا ہے۔

ترکی کے حکام نے انیس کینتر کے والد کو گرفتار کر لیا اور اہل خانہ کو تنگی میں ڈال دیا۔ اس سے قبل حکام نے تُرک باسکٹ بال کھلاڑی پر الزام عائد کیا کہ اس کا تعلق اُس اپوزیشن جماعت سے ہے جو جلا وطن ترک مبلغ فتح اللہ گولن نے بنائی تھی۔