.

پیرس : یونیسکو کے مرکز میں سعودی ثقافتی نمائش کا افتتاح

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی وزیر ثقافت شہزادہ بندر بن عبداللہ بن فرحان آج منگل کے روز فرانس کے دارالحکومت پیرس میں یونیسکو UNESCO کے مرکز میں سعودی ثقافتی نمائش کا افتتاح کر رہے ہیں۔ اس ایونٹ کا مقصد عالمی ثقافتی تبادلے کی مضبوطی، قومی ورثے کا تحفظ اور منتقلی ،،، اور ثقافتی ماحول کی ترقی ہے۔ شہزادہ بندر تعلیم، سائنس اور ثقافت کی قومی کمیٹی کے سربراہ بھی ہیں۔

سعودی خبر رساں ایجنسی SPA کے مطابق یہ نمائش اور یونیسکو میں وزراء ثقافت کا عالمی فورم 2019 بیک وقت منعقد ہو رہا ہے۔ فورم میں دنیا بھر سے وزراء ثقافت کی ایک بڑی تعداد شرکت کر رہی ہے۔ یہاں سعودی عرب واحد ملک ہو گا جو فورم کے ساتھ کسی سرگرمی کا منتظم ہو گا۔ مذکورہ فورم دنیا بھر میں سرکاری پالیسیوں میں ثقافت کے بنیادی مقام اور دیرپا ترقی پر اس کے اثرات کو زیر بحث لانے کے لیے ایک مرکزی ایونٹ ہے۔

سعودی عرب کی اس نمائش کے منتظمین میں وزارت ثقافت، العلا ضلع کی روئل کمیٹی اور مسک انسٹی ٹیوٹ فار آرٹس شامل ہیں۔ نمائش میں 19 فن کار اور 39 فن پارے موجود ہوں گے۔ نمائش میں آرٹ ورک کے مختلف نمونے، کانسی کی تراشی ہوئی اشیاء، تصاویر اور سعودی قومی ورثے کے بارے میں تفصیلات دستیاب ہوں گی۔ ان میں عربی قہوہ، باز کا فن، شاعری، براہ راست موسیقی اور مطبخی فنون (پکوان سے متعلق) شامل ہیں۔

یہ نمائش آنے والوں کو مملکت سعودی عرب کے ماضی سے لے کر حال سے گزارتے ہوئے مستقبل کے تصور سے روشناس کرائے گی ... اور مملکت کی ثقافتی حکمت عملی کو متعارف کرائے گی۔

نمائش کو سعودی عرب کے ثقافتی اور فنی زاویوں پر روشنی ڈالنے کا موقع شمار کیا جا رہا ہے۔ نمائش میں آنے والے سعودی عرب کے بھرپور ثقافتی ورثے اور ثقافتی آگاہی کا تعارف حاصل کریں گے۔

سعودی عرب نے پیرس میں يونیسكو کی 40 ویں جنرل کانفرنس میں باور کرایا تھا کہ ثقافت اور فنون کا شمار مملکت کے ویژن 2030 پروگرام کے ذریعے قومی تغیر کے زاویوں میں ہوتا ہے۔

اس موقع پر سعودی وزیر ثقافت کا کہنا تھا کہ مملکت کے نزدیک ثقافت ایک اہم بنیاد ہے جو انسانی ترقی کو اور معاشروں کے درمیان مفاہمت کے پُلوں کی توسیع کو سپورٹ کرتی ہے تا کہ دنیا کی قومیں ثقافتوں کے اختلاف کے باوجود باہمی طور پر مربوط ہو سکیں۔