.

سعودی آرامکو کے حصص کی ابتدائی فروخت کے لیے اداروں سے 17.1 ارب ڈالر وصول

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب کی تیل کی سب سے بڑی کمپنی آرامکو کے حصص کی سعودی اسٹاک مارکیٹ (تداول) کے ذریعے ابتدائی فروخت کے لیے اداروں کی جانب سے بھرپور دلچسپی کا اظہار کیا گیا ہے۔اس کو اداروں کے لیے مختص حصص کی مد میں 64 ارب ریال (17.1 ارب ڈالر) رقم وصول ہوئی ہے۔اس طرح اس مد میں حصص کی رقم پوری ہوگئی ہے۔

بنک ذرائع نے العربیہ کو بتایا ہے کہ پرچون حصص کی مد میں دس ریال وصول ہوئے ہیں۔ ایک بنکار کے مطابق 20 نومبر تک اداروں کا حصہ مکمل ہوچکا ہے۔ادارہ جاتی سرمایہ کاروں کے لیے چار دسمبر کی تاریخ مقرر کی گئی ہے جبکہ چھوٹے سرمایہ کار28 نومبر تک حصص کے لیے درخواست دے سکتے ہیں۔حصص کی فروخت کا عمل 17نومبر کو شروع ہوا تھا۔

سعودی آرامکو تداول کے ذریعے اپنے ڈیڑھ فی صد حصص فروخت کے لیے پیش کررہی ہے جبکہ نصف فی صد حصص چھوٹے یا انفرادی سرمایہ کاروں کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔باقی حصص ادارہ جاتی سرمایہ کاروں جیسے بنکوں اور خود مختار مالیاتی اداروں کے لیے مختص کیے گئے ہیں۔

سعودی آرامکو کے ابتدائی حصص کی فروخت (آئی پی او) کے لیے پراسیپکٹس کے مطابق کمپنی کے اثاثوں کا تخمینہ 16 سے17 کھرب ڈالر لگایا جائے گا اور اس کے ایک حصص کی قیمت 30 سے 32 ریال (8 سے 8۰53 ڈالر) مقرر کی جائے گی۔البتہ حتمی قیمت کا اعلان پانچ دسمبر کو کیا جائے گا۔

العربیہ انگلش کے تخمینے کے مطابق آرامکو کو حصص کی ابتدائی فروخت سے 24 سے ساڑھے 25 ارب ڈالر کی رقم حاصل ہوگی۔اگر موخرالذکریا اس سے زیادہ رقم حصص کی فروخت سے حاصل ہوتی ہے تو یہ چین کی ای کامرس فرم علی بابا کا ریکارڈ توڑ دے گی۔ علی بابا نے 2014ء میں حصص کی فروخت سے 25 ارب ڈالر کی رقم حاصل کی تھی۔

آئی پی او کے ترمیمی پراسپیکٹس کے مطابق آرامکو کے حصص اہل غیرملکی سرمایہ کاروں اور سعودی عرب میں سرمایہ کاروں کو فروخت کے لیے پیش کیے جارہے ہیں۔ کمپنی نے بنکوں اور کارپوریٹ اداروں کے لیے بولی کے فارم جمع کرانے کی آخری تاریخ چار دسمبر مقرر کی ہے۔واضح رہے کہ سعودی آرامکو نے 2019ء کے پہلے نو ماہ میں 68 ارب ڈالر منافع حاصل کرنے کی اطلاع دی ہے۔اس طرح یہ دنیا میں سب سے منافع بخش کمپنی ہے۔