.

امریکی صدر ٹرمپ کی نیٹو سربراہ اجلاس کے موقع پر ترک ہم منصب سےاچانک بالمشافہ ملاقات

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی صدرڈونلڈ ٹرمپ نے لندن کے نواح میں واقع قصبے وٹفورڈ میں نیٹوکے سربراہ اجلاس کے موقع پر ترک ہم منصب رجب طیب ایردوآن سے اچانک ون آن ون ملاقات کی ہے۔

ترک صدر کے دفتر نے سوشل میڈیا پر دونوں لیڈروں کی بدھ کو ملاقات کی ایک تصویر پوسٹ کی ہے اور وائٹ ہاؤس نے اس بات چیت کی تصدیق کی ہے اور کہا ہے کہ انھوں نے سلامتی اور دوطرفہ اقتصادی تعاون سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا ہے اوراس موضوع پر بھی گفتگو کی ہے کہ آیا ترکی نیٹو اتحاد کے تقاضوں کو پورا کررہا ہے۔

دونوں رہ نماؤں کے درمیان یہ ملاقات ایسے وقت میں ہوئی ہے جب فرانسیسی صدر عمانوایل ماکروں کے زیر قیادت بعض یورپی لیڈر نیٹو اتحاد سے ترکی کے بارے میں سخت موقف اختیار کرنے پر زور دے رہے ہیں۔وہ ترکی کی اکتوبر میں شام کے شمال مشرقی علاقے میں مغربی اتحادی کردملیشیا کے خلاف فوجی کارروائی اور روس سے ایس-400 میزائل دفاعی نظام خرید کرنے پر نالاں ہیں۔

لیکن خود ڈونلڈ ٹرمپ نے ترک صدر ایردوآن پر دباؤ ڈالنے کی بعض کوششوں کی مزاحمت کی ہے۔ انھوں نے گذشتہ ماہ وائٹ ہاؤس میں بھی صدر ایردوآن سے ملاقات کی تھی اور انھوں نے امریکا کی دونوں جماعتوں کے ارکان کانگریس کی جانب سے ترک صدر کو دورے کا دعوت نامہ منسوخ کرنے کے مطالبے کو مسترد کردیا تھا۔ڈیموکریٹس اور ری پبلکن نے ترکی کی شام میں کردملیشیا کے خلاف کارروائی پر کڑی نکتہ چینی کی تھی۔