او آئی سی کو کمزور نہ کیا جائے: انور قرقاش کا انتباہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

متحدہ عرب امارات کے وزیرمملکت برائے امورخارجہ انور قرقاش نے خبردار کیا ہے کہ اسلامی تعاون تنظیم (او آئی سی) کو کمزور نہ کیا جائے کیونکہ ایسا کوئی بھی اقدام اسلامی دنیا کے مفاد میں نہیں ہوگا۔

انور قرقاش نے سوموار کو ایک ٹویٹ میں کہا ہے کہ ’’اسلامی تعاون تنظیم کی کمزوری اسلامی دنیا اور اس کے ممالک کے مفاد میں نہیں۔اس تنظیم اور اس کے رکن ممالک کو نقصان پہنچانے کی پالیسی قلیل المیعاد ثابت ہوگی اور یہ دانش ، اتفاق رائے اور دنیا کے اتحاد پر مبنی نہیں ہے۔‘‘

واضح رہے کہ او آئی سی میں اسلامی دنیا سے تعلق رکھنے والے ستاون ممالک شامل ہیں اور یہ تنظیم خود کو مسلم اُمہ کی اجتماعی آواز قراردیتی ہے لیکن مبصرین کا کہنا ہے کہ اس کے رکن بعض ممالک دیگرعلاقائی تنظیموں میں شامل ہیں یا ایسی گروہ بندی کررہے ہیں جس سے او آئی سی کی اجتماعیت کو نقصان پہنچ رہا ہے اور یہ مختلف اسلامی ممالک کو درپیش بحرانوں کے حل میں کوئی فیصلہ کن اور فعال کردار ادا نہیں کر پارہی ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں