انڈونیشی کمپنیوں پرایران پرامریکی پابندیوں کی خلاف ورزی کا الزام

'انڈونیشیا کی کمپنپاں ایرانی ہوائی جہازوں کی مرمت اور اپ گریڈ کرتی ہیں'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
1 منٹ read

امریکی محکمہ انصاف نے ایک انڈونیشی تاجر اور اس کے 3 ذیلی اداروں پر الزام لگایا ہے کہ وہ بلیک لسٹ کی گئی ایرانی فضائی کمپنی مہان ایئر کو کروڑوں ڈالر مالیت کے نئے اور اپ گریڈ کردہ پرزہ جات فراہم کرکے ایران پر عاید امریکی پابندیوں کی خلاف ورزکی کے مرتکب ہو رہے ہیں۔

امریکی محکمہ انصاف کے ایک بیان کے مطابق سنیکرو کونٹگرو ، پی ٹی ایم ایس ایروسپورٹ کے صدر اور سی ای او ، پی ٹی ٹی کنڈیازا انرجی اتاما اور پی ٹی انتسنا کارازی نے امریکی ساختہ طیارے کے پرزے ایران کی مہان ایئر لائن کو برآمد کیے۔ یہ پروزہ جات سنہ 2011 سے 2018ء ایرانی کمپنیوں کو فراہم کیے گئے جوکہ امریکا کی طرف سے تہران پرعاید کردہ پابندیوں کی کھلم کھلا خلاف ورزی ہے۔

واشنگٹن میں وفاقی عدالت کے ذریعہ دائر فرد جرم کے مطابق کونٹاگورو نے مبینہ طور پر ہوائی جہاز کے پرزے مرمت کے لیے امریکا بھیجے اور انہیں ایران بھیج دیا گیا۔

اس فرد جرم میں امریکی برآمدی قوانین کی خلاف ورزی، منی لانڈرنگ اور کونٹیگورو اور اس کی کمپنیوں کے خلاف جھوٹے بیانات سمیت آٹھ الزمات عاید کیے ہیں۔

کونٹاگورو نے امریکا سے بعض پرزہ جات کی مرمت کراکے لاکھوں ڈالر کمائے۔ یہ پروزے سنگاپور ، ہانگ کانگ اور تھائی لینڈ کے راستے ایران کو بھیجے گئے۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں