.

'او آئی سی' کی بیت المقدس میں برازیل کے تجارتی دفتر کھولنے کے اعلان کی مذمت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

اسلامی تعاون تنظیم' او آئی سی' نے برازیل کی طرف سے مقبوضہ بیت المقدس میں تجارتی دفتر کھولنے کے اعلان کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے اسے غیرقانونی اقدام سے تعبیر کیا ہے۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق 'او آئی سی' کی سرکاری ویب سائٹ پر جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ مشرقی یروشلم میں برازیل کے تجارتی دفتر کے قیام کا اعلان قابل مذمت ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ برازیل کی حکومت کی طرف سے القدس کے حوالے سے تاریخی موقف کوتبدیل کرنا، بین الاقوامی قوانین اور عالمی قراردادوں کو نظر انداز کرنا افسوسناک ہے۔ برازیل فلسطینی عوام کے جائز حقوق کی حمایت اورعالمی قوانین کا پابند ہے۔

'اوآئی سی' نے برازیل کی حکومت سے القدس میں تجارتی دفترکے قیام کا فیصلہ واپس لینے کا مطالبہ کیا ہے۔ بیان میں کہا گیا ہے کہ برازیل کی طرف سے القدس میں تجارتی دفترکے قیام کا فیصلہ اسرائیلی ریاست کے ناجائز قبضے کی حمایت اور تاریخی شہر کے حوالے سے صہیونی ریاست کے متعصبانہ فیصلوں کی حمایت کےمترادف ہے۔

تنظیم کے سکریٹری جنرل یوسف بن احمد العثیمین نے مطالبہ کیا کہ برازیل القدس کے حوالے سے بین الاقوامی قانون کا احترام کرے اور سیاسی ذمہ داریوں پرعمل درآمد کو یقینی بنائے تاکہ دو ریاستی حل کی راہ ہموار کی جا سکے۔