.

ایران باز نہ آیا تو اسے مزید سبق سکھائیں گے: امریکی سینیٹر

'امریکیوں کے قاتل سلیمانی کی ہلاکت ایرانی رجیم پر کاری ضرب ہے'

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کی ری پبلیکن پارٹی کے سینیٹر لنڈسے گراہم نے آج جمعہ کے روز امریکی فوج کے فضائی حملے میں ایرانی قدس بریگیڈ کے سربراہ قاسم سلیمانی کی ہلاکت کو ایرانی رجیم پر کاری ضرب قرار دیا ہے۔ ان کا کہنا ہے کہ قاسم سلیمانی کی ہلاکت ایران کے لیے بہت بڑا دھچکا ہے، اگر ایران باز نہ آیا تو اسے مزید سبق سکھائیں گے۔

ٹویٹر پر پوسٹ کردہ ایک ٹویٹ میں لنڈ سے گراہم کا کہنا تھا کہ قاسم سلیمانی کی ہلاکت کے بعد ایران کو پتا چلا کہ امریکیوں کو ہلاک اور زخمی کرنے اور ان کا خون بہانے کی کیا قیمت چکانا پڑتی ہے۔امریکیوں پرحملے بہت مہنگے پڑتے ہیں۔ سلیمانی آیت اللہ کی حکومت کے انتہائی بے رحم اور شیطانی عناصر میں سے ایک تھا۔اس کے ہاتھ پرامریکیوں کے خون سے رنگین تھے۔

گراہم نے "ٹویٹر" ٹویٹ میں مزید کہا ہے کہ امریکیوں کو زخمی کرنے اور ہلاک کرنے کی قیمت بہت مہنگی ہے۔ انہوں نے ایرانی ملیشیائوں کے خلاف صدر ٹرمپ کی جارحانہ پالیسی کو سراہا۔

تفصیلات کے مطابق اس آپریشن کا آغاز جمعے کو علی الصبح ہوا اس وقت ہوا جب ایرانی پاسداران انقلاب کے بعض رہ نما الحشد الشعبی ملیشیا کے متعدد رہ نماؤں اور ارکان کے ساتھ بغداد کے ہوائی اڈے سے باہر نکل رہے تھے۔ اس دوران جنوبی مرکزی دروازے کی جانب موجود ان افراد کو امریکی طیاروں کے ذریعے نشانہ بنایا گیا۔

بعد ازاں اس مقام کو راکٹ حملے کا نشانہ بنایا گیا جس کے نتیجے میں کئی افراد ہلاک ہو گئے۔ ہلاک ہونے والوں میں القدس فورس کا سربراہ قاسم سلیمانی، الحشد الشعبی ملیشیا میں دوسرا اہم ترین شخص ابو مہدی المہندس، ملیشیا میں تعلقات عامہ کا ذمے دار محمد رضا الجابری اور ملیشیا میں گاڑیوں کے امور کا ذمے دار حیدر علی وغیرہ شامل ہیں۔