.

ایران کی جوہری معاہدے سے نکلنے کی دھمکی منفی پیغام کی غماز ہے: امریکی ایلچی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکا کے ایلچی برائے تخفیف اسلحہ رابرٹ ووڈ نے کہا ہے کہ ایران اگر یورپی ممالک کے اقدام کے ردعمل میں جوہری ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ کے معاہدے ( این پی ٹی) سے نکلنے کی دھمکی کو عملی جامہ پہناتا ہے تو اس سے بہت منفی پیغام جائے گا۔

یورپی ممالک نے ایران پر2015ء میں چھے عالمی طاقتوں سے طے شدہ جوہری سمجھوتے کی شرائط کی مسلسل خلاف ورزیوں کا الزام عاید کیا ہے اور اس سمجھوتے میں طے شدہ میکانزم کے تحت اس کا معاملہ اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل میں بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔

اس کے ردعمل میں ایرانی وزیر خارجہ جواد ظریف نے سوموار کو یہ دھمکی دی تھی کہ ’’اگر یورپیوں نے اپنا نامناسب کردار جاری رکھا یا ایران کی فائل کو سلامتی کونسل کو بھیجا تو ہم این پی ٹی کو خیرباد کہہ دیں گے۔‘‘

امریکی سفیر رابرٹ ووڈ نے منگل کے روز جنیوا میں صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے کہا ہے کہ ’’جوہری ہتھیاروں کے عدم پھیلاؤ کے معاہدے پر اپریل میں بات چیت ہوگی۔ہم اس جائزہ کانفرنس کی تیاری کررہے ہیں جبکہ ایران اس معاہدے سے نکلنے کی دھمکی دے رہا ہے۔‘‘

انھوں نے کہا:’’ہمارے خیال میں ایران کو اپنے ضرررساں کردار کو تبدیل کرنے کی ضرورت ہے۔ وہ امریکا کے ساتھ مل بیٹھے اور اس کے ساتھ ایک ایسے سمجھوتے کے لیے بات چیت کرے جس میں جوہری تنازع کےعلاوہ بیلسٹک میزائلوں کے پھیلاؤ اور ترقی اور دنیا بھر میں اس کی تخریبی سرگرمیوں کا بھی احاطہ کیا گیا ہو۔‘‘