.

لیبی فوج نے معیتیقہ ہوائی اڈے کو'نو فلائی زون' قرار دیا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

لیبیا کی قومی فوج نے معیتیقہ ہوائی ایئر اور اس میں شامل ہوائی اڈے کو نو فلائی زون قرار دیتے ہوئے اسے کسی بھی قسم کی سول یا فوجی فضائی آمد ورفت کے لیے بند کردیا ہے۔ لیبی فوج کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں خبردار کیا گیا ہے کہ 'معیتیقہ' ہوائی اڈے کو کسی بھی قسم کی ایوایشن کے لیے استعمال کرنے کے خطرناک نتائج سامنے آسکتے ہیں اور اس کی ذمہ داری ایسا کرنےوالوں پرعاید ہوگی۔

العربیہ ڈاٹ نیٹ کے مطابق لیبیا کی نیشنل آرمی نے ایک بیان میں کہا کہ معیتیقہ ہوائی اڈے کی فضائی حدود میں سویلین یا فوجی طیاروں کی آمد ورفت کے لیے بند کی گئی ہیں۔ اس ہوائی اڈے پرکسی قسم کی فضائی نقل وحرکت قومی وفاق حکومت اور فوج کےدرمیان جنگ بندی کی خلاف ورزی تصور کیا جائے گا۔

لیبیا کی نیشنل آرمی نے معیتیقہ ایئر بیس سے مبینہ طورپر ترکی کا ایک ڈرون طیارہ اڑان بھرتے ہی مار گرایا گیا ہے۔ یہ ڈرون طیارہ طرابلس میں لیبی فوج کی یونٹوں پر بم باری کے لیے بھیجا گیا تھا۔ اس سے ظاہر ہوتا ہے کہ ترکی اس اڈے کو لیبیا میں قومی فوج کے خلاف اپنی کارروائیوں کے لیے کھلے عام استعمال کررہا ہے۔

لیبیا کی فوج نے العربیہ اور الحدث ٹی وی چینلوں کو بتایا کہ معیتیقہ ہوائی اڈے کو دہشت گردانہ مقاصد کے لیے استعمال کیا جاتا ہے۔ اس لیے اسے بند کرتے ہوئے یہاں کسی قسم کی فضائی سرگرمی پرپابندی لگا دی گئی ہے۔

لیبیا نیشنل آرمی کے ترجمان میجر جنرل احمد المسماری نے اپنے سرکاری فیس بک پیج پر پوسٹ کردہ بیان کیا ہے کہ لیبیا کی مسلح افواج کے جنرل کمانڈ کے حکم پر معیتیقہ ہوائی اڈے سے اڑںے والے ترکی کے ایک ڈرون طیارے کو مار گرایا گیا ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ یہ طیارہ طرابلس میں قومی فوج کے مراکز کو بمباری سے نشانہ بنانے کے لیے بھیجا گیا تھا۔

اس بیان کے کچھ دیر بعد جنرل المسماری نے باضابطہ طور پر ایک پریس کانفرنس میں معیتیقہ ہوائی اڈے کو 'نو فلائی زون' قرار دیتے اس پرکسی قسم کی ایوی ایشن سرگرمی پرپابندی لگا دی ہے۔ ان کا کہنا تھا کہ نیشنل آرمی کے احکامات کے تحت تا اطلاع ثانی معیتیقہ ہوائی اڈے پر کسی قسم کی کوئی فضائی آمد ورفت نہیں ہوگی۔ اسے نہ تو سول مقاصد کے لیے استعمال کیا جائے گا اور نہ ہی یہاں پر کسی قسم کی فوجی سرگرمی کی اجازت ہوگی۔

خیال رہےکی لیبیا کی نیشنل آرمی کی طرف سے ترکی پرالزام عاید کیا جاتا ہے کہ وہ شام سے جنگجوئوں کو لیبیا منتقل کررہا ہے۔ لیبی فوج کا دعویٰ ہے کہ ترکی جنگجوئوں اور اپنے فوجیوں کو لیبیا کی قومی فوج کی مدد لے لیے معیتیقہ ہوائی اڈے کے راستے پہنچا رہا ہے۔ معیتیقہ ہوائی اڈے کو لیبیا میں قومی وفاق حکومت کے لیے کمک کا اہم فضائی ذریعہ سمجھا جاتا ہے۔