کرونا وائرس کی وجہ سے فرانس اور اٹلی میں چینی قمری سال کی تقریبات منسوخ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

چینی حکام نے کرونا وائرس پھیلنے کے خدشے کےتحت فرانس اور اٹلی میں نئے قمری سال کی تقریبات منسوخ کردی ہیں۔

خبر رساں اداروں کے مطابق فرانس کے دارالحکومت پیرس کی خاتون میئر 'ان ایڈا الگو' نے بتایا ہےکہ پیرس میں موجود چینیوں نے اپنی حکومت کی ہدایت پر کرونا وائرس پھیلنے کے خطرے کے پیش نظر نئے قمری سال کے جشن کی تقریبات منسوخ کردی ہیں۔

ایڈلگو نے ریڈیو یورپ 1 کو ایک بیان میں مزید کہا کہ پیرس میں چینی کمیونٹی کے نمائندوں سے میری ملاقات ہوئی ہے۔ وہ بہت پریشان ہیں۔ انہوں نے دارالحکومت میں جمہوریہ اسکوائر میں ہونے والے ایک جشن کو منسوخ کردیا ہے۔ یہ جشن کل اتوار کی شام کو منعقد کرنے کی تیاریاں کی جا رہی تھیں۔

انھوں نے مزید کہا کہ چینی باشندے کرونا وائرس پھیلنے کے بعد ایسے کسی بھی جشن کو منانے کے خطرے کے متحمل نہیں ہوسکتے۔

فرانس کے جنوب مغرب میں بورڈو کے میئر نے بھی کہا ہے کہ کرونا وائرس کے انفیکشن کی منتقلی کے خطرے کوکم کرنے کے لیے یہاں پر چینی کمیونٹی کو جشن کی تقریبات روکنے کی ہدایت کی گئی ہے۔۔

چین میں اس مہلک وائرس کی وجہ سے اموات کی تعداد 80ہوگئی ہے اور قریباً 28 سو افراد میں اس وائرس کی موجودگی کی تشخیص کی گئی ہے۔فرانس پہلا یورپی ملک ہے جس میں 'کرونا' وائرس کے پہنچنےکی تصدیق کی گئی ہے۔

ادھر اٹلی کے دارالحکومت روم میں بھی چینی باشندوں نے نئے قمری سال کے جشن کی تقریبات منسوخ کردی ہیں۔روم میں چینی کمیونٹی کے ایک ترجمان نے اتوار کے روز اطالوی خبر رساں ایجنسی 'اے این ایس اے' کو بتایا کہ شہر میں چین کے نئے قمری سال کی دو فروری کو ہونے والی تقریبات ملتوی کردی گئی ہیں۔

انھوں نے مزید کہا چینی برادری کے تمام افراد نے اس بات سے اتفاق کیا کہ تقریبات کو ملتوی کردیا جانا چاہیےکیونکہ شرکاء میں کرونا کے متاثرہ مریض ہو سکتے ہیں۔ اس طرح کی صورت حال جشن منانے کی اجازت نہیں دیتی۔

مقبول خبریں اہم خبریں