.

پابندیوں نے خطے میں ایران کے جنگی میکانزم کی فنڈنگ مشکل بنا دی : برائن ہک

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے لیے امریکا کے خصوصی نمائندے برائن ہک کا کہنا ہے کہ امریکی پابندیوں نے خطے میں ایران کے جنگی میکانزم کی فنڈنگ کو بڑی حد تک مشکل بنا دیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ "ہم ایرانی نظام کے سامنے ایک طاقت ور موقف کے حامل ہیں"۔

امریکی وزارت خزانہ نے گذشتہ روز ایٹمی توانائی کی ایرانی ایجنسی پر پابندیاں عائد کر دی ہیں۔

واشنگٹن سے اخباری بیان میں ہک نے واضح کیا کہ ایٹمی توانائی کی ایرانی ایجنسی نے جوہری وعدوں کی خلاف ورزی میں اپنا کردار ادا کیا۔ انہوں نے مطالبہ کیا کہ عالمی نظام کو درپیش ایرانی خطرے کا مقابلہ کرنے کی ضرورت ہے۔

امریکی نمائندے نے باور کرایا کہ ایرانی نظام اپنے عوام کے وسائل اور دولت کا استحصال کر کے انہیں خطے میں تنازعات کا پیٹ بھرنے کے واسطے استعمال کر رہا ہے۔

ایرانی جوہری معاہدے میں فریق کی حیثیت رکھنے والے یورپی ممالک (فرانس، برطانیہ اور جرمنی) نے 14 جنوری کو اس بات کی کوشش شروع کی کہ تہران کو پھر سے اس کے جوہری وعدوں کے احترام کا پابند بنایا جائے۔

ادھر امریکی نمائندے کا کہنا ہے کہ واشنگٹن ایران کے ساتھ ایک نیا (جوہری) معاہدہ کرنے کے لیے تیار ہے۔

برائن ہک کا مزید کہنا تھا کہ "ہم نے ایرانی عوام کے حوالے سے ایرانی نظام کے جھوٹ کا پول کھول دیا ... وہ ہی ایرانی عوام جنہوں نے امریکی پرچم روندنے سے انکار کر دیا"۔