.

یونان کا سعودی عرب میں پیٹریاٹ میزائل دفاعی نظام نصب کرنے کا اعلان

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

یونان نے اپنے پیٹریاٹ دفاعی میزائل نظام کو سعودی عرب میں بھیجنے کا اعلان کیا ہے۔وہ یہ میزائل امریکا ، برطانیہ اور فرانس کے ساتھ ایک مشترکہ پروگرام کے حصے کے طور پر نصب کرے گا۔

یونانی حکومت کے ترجمان اسٹیلیوس پیٹساس نے ایتھنز میں صحافیوں کو بتایا ہے کہ ’’یہ میزائل سعودی عرب کی لاگت پر توانائی کے اہم ڈھانچے کے تحفظ کے لیے نصب کیے جائیں گے۔‘‘

انھوں نے کہا کہ ’’ ان کی تنصیب سے یونان توانائی کی سکیورٹی میں اپنا حصہ ڈالے گا،ہمارے ملک کی علاقائی استحکام کے ایک عامل کے طور پر شناخت ہوگی اور سعودی عرب کے ساتھ ہمارے دوطرفہ تعلقات مضبوط ہوں گے۔‘‘

ترجمان نے مزید بتایاہے کہ پیٹریاٹ میزائلوں کو سعودی عرب میں بھییجنے کے بارے میں اکتوبر سے بات چیت جاری تھی لیکن انھوں نے ان کی تنصیب کی کوئی تاریخ نہیں بتائی ہے۔

اسٹیلیوس پیٹساس کا کہنا تھا کہ امریکا ، برطانیہ اور فرانس پہلے سے اس پروگرام کا حصہ ہیں اور اٹلی کی بھی اس میں شمولیت کا امکان ہے۔

انھوں نے واضح کیا ہے کہ ’’یہ ایک میزائل دفاعی نظام ہے اور اس حیثیت میں اس سے خطے کے دوسرے ممالک کو کوئی خطرہ لاحق نہیں ہوگا۔‘‘قبل ازیں انھوں نے اسی ہفتے بتایا تھا کہ ان میزائلوں کے ساتھ ایک سو تیس اہلکار سعودی عرب بھیجے جائیں گے۔

یونان کے اس اعلان کے وقت وزیراعظم کیریاکوس مٹسوٹکیس مشرقِ اوسط کے خطے کے دورے پر تھے۔ انھوں نے سعودی عرب اور متحدہ عرب امارات کی قیادت سے سرمایہ کاری کے فروغ کے لیے بات چیت کی ہے۔وہ سوموار کے روز الریاض میں تھے اور منگل کو انھوں نے ابوظبی کا دورہ کیا تھا۔