.

امریکی پائلٹ نے محبوبہ کے لیے منگنی کی انگوٹھی کو خلاء کی سیر کروائی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

امریکی فضائیہ کے ایک پائلٹ نے نہایت منفرد اور انوکھے انداز سے اپنی محبوبہ کا ہاتھ مانگ کر اسے حیران کر دیا۔ مذکورہ پائلٹ نے ایک غبارے کے ذریعے منگنی کی انگوٹھی کو خلا میں بھیجا اور پھر انگوٹھی کے واپس زمین پر آنے کے بعد اسے اپنی محبوبہ کو پیش کیا۔

برطانوی اخبار ڈیلی میل کے مطابق کہانی کا آغاز اس وقت ہوا جب امریکی ریاست میزوری سے تعلق رکھنے والے امریکی فضائیہ کے پائلٹ اسٹیورٹ شیپی نے اپنی محبوبہ میری لیزمین اور بعض دیگر ساتھیوں کے ہمراہ ایک میڈل کو غبارے میں لٹکا کر خلا میں بھیجنے کا منصوبہ بنایا۔ بعد ازاں غبارے کو آسمان میں چھوڑنے سے چند لمحے قبل شیپی نے میڈل کو اس امید کے ساتھ منگنی کی انگوٹھی کی "نقل" سے تبدیل کر دیا کہ غبارے کی واپسی پر یہ شیپی کی منگیتر کو مل جائے گی۔

شیپی نے اپنی محبوبہ میری کو بتایا کہ وہ غبارے کے ساتھ ایک دھات کی کرنسی لٹکائے گا اور غبارے کے ساتھ ایک کیمرا بھی نصب ہو گا۔ اس کیمرے کے ذریعے غبارے کے پورے سفر کی ریکارڈنگ ہو گی۔

شیپی کی جانب سے چھوڑا گیا فضائی غبارہ آسمان کی جانب بلند ہونا شروع ہوا یہاں تک کہ وہ 90 ہزار فٹ کی بلندی پر پہنچ گیا۔ اس دوران غبارہ تیزی سے گھومنے لگا اور پھر پھٹ گیا۔ اس کے نتیجے میں غبارے کے ساتھ موجود پیکٹ زمین پر آ گرا۔ غبارے کے ساتھ مربوط بکس میں GPS نظام نصب تھا جس کی مدد سے انگوٹھی کو تلاش کر لیا گیا۔ میری اور شیپی کو یہ انگوٹھی ایک کھیت میں ملی۔

میری غبارے کے ساتھ مربوط پیکٹ کو دیکھنے کے لیے اس کے قریب گئی تو وہ انگوٹھی کو دیکھ کر ششدر رہ گئی۔ اسی وقت اصلی انگوٹھی تھامے شیپی نے روایتی انداز سے ایک گھٹنے پر بیٹھ کر میری سے اس کا ہاتھ مانگ لیا۔