.

ایران کی جانب سے جوہری معاہدے کی خلاف ورزی پر فرانس کی تشویش

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

فرانس کے وزیر خارجہ جان ایف لودریاں نے ایران کی جانب سے ویانا معاہدے (جوہری معاہدے) کی خلاف ورزی پر تشویش کا اظہار کیا ہے۔

میونخ سربراہ اجلاس کے ضمن میں لودریاں نے بتایا کہ انہوں نے اپنے ایرانی ہم منصب جواد ظریف کو آگاہ کر دیا ہے کہ فرانس خلیج میں کشیدگی کم کرانے کا مصمم ارادہ رکھتا ہے۔

فرانس کے وزیر خارجہ نے ترکی پر بھی زور دیا کہ وہ لیبیا کے حوالے سے برلن کانفرنس کے فیصلوں کا احترام کرے۔ کانفرنس میں لڑائی روک دینے ، عسکری عدم مداخلت اور لیبیا کے بحران کو نہ بھڑکانے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

فرانس نے گذشتہ پیر کو ایران کی جانب سے مدار میں مصنوعی سیارہ چھوڑنے کی کوشش کی مذمت کی تھی۔ یہ سیارہ اسی نوعیت کی "بیلسٹک" ٹیکنالوجی کا حامل تھا جو جوہری ہتھیار لے جانے کے واسطے استعمال ہوتی ہے۔ فرانس نے تہران سے مطالبہ کیا تھا کہ وہ اپنے بین الاقوامی "وعدوں" کا احترام کرے۔

فرانس کی وزارت خارجہ کی ترجمان کے مطابق سلامتی کونسل کی قرار داد 2231 کی رُو سے ایران اس نوعیت کی سرگرمیاں انجام نہیں دے سکتا .. ان میں ایسے بیلسٹک میزائلوں کو داغنے کی کارروائی بھی شامل ہے جو جوہری ہتھیار لے جانے کی صلاحیت رکھتے ہوں۔ ترجمان نے مزید بتایا کہ ایران نے ایک نئے بیلسٹک میزائل کا انکشاف کیا ہے جس کی پہنچ 500 کلو میٹر سے تجاوز کر سکتی ہے۔