.

ایران میں قید برطانوی خاتون کا کرونا وائرس کا شکار ہونے کا شبہ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران میں قید ایک ایرانی نژاد برطانوی سماجی کارکن نازنین زغاری کے شوہر نے دعویٰ کیا ہے کہ اس کی اہلیہ ایران میں کرونا وائرس کا شکار ہو گئی ہیں۔

خبر رساں اداروں کے مطابق نازنین زغاری کے شوہر رچرڈ راٹ کلف نے بتایا کہ اس کی اہلیہ نے ایک انوکھے نزلہ زکام کی وجہ سے اپنے طبی معائنے کی درخواست تھی تاکہ اس بات کا پتا چلایا جا سکے کہ وہ کرونا وائرس سےمتاثر تو نہیں مگر ایرانی حکام نے اس کا طبی معائنہ کرنےسے انکار کردیا۔

ہفتے کے روز زغاری نےجیل سے اپنے شوہر کو ٹیلیفون پر بتایا کہ میں ٹھیک نہیں۔ میری حالت انتہائی تشویشناک ہے۔ اس نے مزید کہا کہ میں طویل عرصے سے زکام نما ایک عارضے کا شکار ہوں مگر یہ معمول کا نزلہ زکام نہیں۔ میرے گلے میں انفیکشن، تیز بخار اور سانس لینے میں دشواری ہے۔

نازنین نے اپنے شوہر سے کہا کہ مجھے معلوم ہے کہ مجھے بہتر ہونے کے لیے دوئی لینا ہو گی۔ یہ علامات جادو کے ذریعے دور نہیں ہو سکتیں۔

رائٹ کلف نے برطانوی وزیر اعظم بورس جانسن پر زور دیا کہ وہ اس بات کو یقینی بنائیں کہ ان کی اہلیہ کا فوری طور پر کرونا وائرس کا معائنہ کیا جائے۔ انہوں نے اپنی اہلیہ کو سفارتی تحفظ فراہم کرنے کی ضرورت پر بھی زور دیا۔

خیال رہے کہ ایران میں سرکاری سطح پر 43 افراد کے کرونا وائرس کے نتیجے میں وفات پانے کی تصدیق کی گئی ہے۔