.

کرونا وائرس کی وجہ سے روس نے ایرانیوں کے لیے دروازے بند کر دیے

ایران میں کرونا کی تباہ کاریاں جاری، مزید 17 ہلاکتوں کے بعد 1234 نئے کیسز کی تصدیق

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

روس نے اعلان کیا ہے کہ کرونا وائرس کے پھیلاؤ کو محدود کرنے کے لیے ایران سے آنے والے مسافروں کے لیے اپنی سرحدیں بند کر دی گئیں ہیں۔

تفصیلات کے مطابق روسی حکومت کی طرف سے جاری کردہ ایک سرکاری بیان میں کہا گیا ہے کہ روسی فیڈرل سیکیورٹی سروس ایران سے روس میں ملازمت، سیاحت اور تعلیم کے لیے آنے والے ایرانیوں کو عارضی طور پر روکنے کے لیے اقدامات کر رہی ہے۔ اس اعلان پر فیصلہ گذشتہ شب کیا گیا ہے۔

بیان میں وضاحت کی گئی ہے کہ ایرانی شہریوں کی روس میں داخلے پر پابندی کا فیصلہ گرینچ کے معیاری وقت کے مطابق رات 12 بجے نافذ ہو جائے گا۔ اس اقدام کا مقصد ایران میں پھیلنے والے کرونا وائرس کو روس میں داخؐل ہونے سے روکنا ہے۔

تاہم اس میں فیصلے میں روس میں مقیم افراد، یوریشین اکنامک یونین کے شہری جن میں آرمینیا، بیلاروس، قازقستان اور کرغزستان کے علاوہ سرکاری وفود اور ٹریول عملہ شامل نہیں ہیں۔

اس حکم نامے میں یہ بھی اشارہ کیا گیا ہے کہ وزارت خارجہ ایران سے ویزا کی درخواستیں وصول نہیں کرے گی۔ روسی حکومت نے سول ایوی ایشن اتھارٹی کو ہدایت کی ہے کہ وہ روسی فضائی کمپنیوں کو ان اقدامات سے آگاہ کریں۔

قابل ذکر بات یہ ہے کہ ایران نے جمعہ کے روز کرونا وائرس کی وجہ سے 17 نئی اموات کی تصدیق کی ہے جس کے بعد سرکاری سطح پر کرونا وائرس سے ہونے والی ہلاکتوں کی تعداد 124 ہو گئی ہے۔ غیر سرکاری ادارے ہلاکتوں کی تعداد اس سے کہیں زیادہ بتاتے ہیں۔

ایرانی وزارت صحت کے ترجمان کیانوش جہان پور نے ایک پریس کانفرنس میں بتایا کہ ملک میں کرونا وائرس کے مزید 1234 کیسز سامنے آئے ہیں جس کے بعد ایران میں کرونا کے تصدیق شدہ کیسز کی تعداد 4747 ہو گئی ہے۔ وزارت صحت 15 ہزار 980 افراد کا طبی معائنہ جاری رکھے ہوئے ہے۔ جلد ہی ان کی میڈیکل رپورٹس بھی سامنے آ جائیں گی۔