.

کرونا کے سبب خطے میں فضائی کمپنیوں کا متوقع خسارہ 7.2 ارب ڈالر

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

انٹرنیشنل ایئر ٹرانسپورٹ ایسوسی ایشن IATA کے جاری کردہ اعداد و شمار کے مطابق کرونا وائرس کے وسیع پیمانے پر پھیل جانے کی صورت میں مشرق وسطی میں فضائی کمپنیاں تقریبا 7.2 ارب ڈالر سے محروم ہو جائیں گی۔ یہ رقم سال 2020 کے دوران دنیا بھر میں فضائی کمپنیوں کی آمدنی کے مجموعی خسارے یعنی 113 ارب ڈالر کا تقریبا 6.4% ہے۔

مذکورہ اعداد و شمار کے مطابق بحرین، عراق، لبنان، امارات اور ایران کی فضائی کمپنیاں مسافروں کی تعداد میں متوقع کمی کے ساتھ 4.9 ارب ڈالر کی آمدنی سے محروم ہوں گی جب کہ مشرق وسطی کی دیگر کمپنیاں مسافروں کی تعداد میں 9% کی متوقع کمی کے ساتھ تقریبا 2.3 ارب ڈالر کی آمدنی کے خسارے سے دوچار ہوں گی۔

ایاٹا کی جانب سے گذشتہ روز جاری بیان میں کہا گیا ہے کہ کرونا وائرس پر کنٹرول کی صورت میں رواں سال عالمی ایوی ایشن کے سیکٹر کا خسارہ 63 ارب ڈالر تک پہنچ سکتا ہے۔ تاہم اس مرض کے زیادہ وسیع پیمانے پر پھیل جانے کی صورت میں مذکورہ خسارہ 113 ارب ڈالر ہو سکتا ہے۔

ایاٹا کے مطابق کرونا وائرس کے فضائی کارگو پر مرتب ہونے والے اثرات کے حوالے سے اعداد و شمار ابھی دستیاب نہیں ہیں۔

یاد رہے کہ گذشتہ ماہ ایاٹا نے توقع ظاہر کی تھی کہ چین سے مربوط منڈیوں میں کرونا وائرس کے پھیلاؤ کے سبب خسارے کا حجم 29.3 ارب ڈالر تک پہنچ سکتا ہے۔ تاہم اس مرض کے 80 سے زیادہ ملکوں میں پھیل جانے کے بعد دنیا بھر میں فضائی پروازوں کی بکنگ بڑے پیمانے پر متاثر ہوئی۔