.

کرونا وائرس کا خطرہ: علی خامنہ ای کی ایران کے سالِ نو پر تقریر منسوخ

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

ایران کے سپریم لیڈر آیت اللہ علی خامنہ ای نے ملک بھر میں کرونا وائرس سے ہلاکتوں کے پیش نظر فارسی سالِ نوکے آغاز پر کی جانے والی اپنی تقریر منسوخ کردی ہے جبکہ اس مہلک وائرس سے متاثرین کی تعداد میں مسلسل اضافہ ہورہا ہے۔

ان کے دفتر نے سوموار کو ایک بیان میں کہا ہے کہ’’ ہر سال امام رضا کے مزار پر سالِ نو کے آغاز پر منعقد ہونے والی تقریب اس مرتبہ منسوخ کردی گئی ہے۔رہبرِ اعلیٰ اس سے خطاب نہیں کریں گے اور وہ مشہد بھی نہیں جائیں گے‘‘۔

دریں اثناء ایران کی وزارت صحت کے ترجمان کیانوش جہان پور نے سرکاری ٹی وی پر کرونا وائرس سے ہلاکتوں اور متاثرین کے نئے اعداد و شمار جاری کیے ہیں۔ان کے مطابق اس مہلک وائرس کا شکار ہوکر مرنے والوں کی تعداد 237 ہوگئی ہے اور 7161 افراد متاثر ہوئے ہیں۔

گذشتہ 24 گھنٹے میں ایران میں چین سے پھیلنے والے اس وائرس سے 43 اموات ہوئی ہیں اور 595 نئے کیس ریکارڈ کیے گئے ہیں۔چین سے باہر کسی ملک میں کرونا وائرس سے یہ سب سے زیادہ ہلاکتیں ہیں۔

ایرانی عدلیہ کے سربراہ ابراہیم رئیسی کا کہنا ہے کہ کرونا وائرس سے درپیش خطرے کے پیش نظر ملک کی مختلف جیلوں سے قریباً 70 ہزار قیدیوں کو رہا کردیا گیا ہے۔