.

کرونا وائرس کے متعلق آگاہی کے نام پر ہیکرز لوگوں کی ذاتی معلومات چُرا رہے ہیں !

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

برطانوی اخبار ڈیلی میل کے مطابق بعض ہیکروں نے کرونا وائرس کے سبب دنیا کی اکثر آبادی کو درپیش بوکھلاہٹ اور پریشانی سے فائدہ اٹھاتے ہوئے اسے انٹرنیٹ صارفین کی ذاتی معلومات چرانے کے واسطے استعمال کرنا شروع کر دیا ہے۔

سائبر سیکورٹی کے ماہرین نے انکشاف کیا ہے کہ ہیکروں کی جانب سے حالیہ عرصے میں لوگوں کو Malicious سافٹ ویئرز کی حامل ای میلز بھیجی جا رہی ہیں۔ ان ای میلز کو کرونا وائرس کے بارے میں آگاہی اور اہم معلومات کا عنوان دے کر ارسال کیا جاتا ہے۔

جاپان میں سامنے آنے والی ان ای میلز میں دعوی کیا گیا کہ کرونا وائرس پورے ملک میں جنگل کی آگ کی طرح پھیل چکا ہے۔ ای میل میں پڑھنے والے پر زور دیا جاتا ہے کہ وہ مزید معلومات کے لیے ای میل کے ساتھ منسلک فائل کھول لیں۔ یہ منسلک فائلز ہیکروں کو اپنے شکار کے کمپیوٹر تک رسائی دے دیتی ہیں۔ اس طرح ہیکرز اپنے شکار کی ذاتی معلومات چُرانے اور اس کے کمپیوٹر کو کسی وائرس سے متاثر کرنے میں کامیاب ہو جاتے ہیں۔

سائبر سیکورٹی سے متعلق دو کمپنیوں IBM X-Force اور Kasperky کے ماہرین مذکورہ نوعیت کی متعدد ای میلز کو روکنے میں کامیاب ہوئے ہیں۔ ابتدائی تحقیقات سے نظر آتا ہے کہ یہ ای میلز جاپان میں معذور افراد کے لیے دیکھ بھال کی خدمات فراہم کرنے والے ایک ادارے کے واسطے سے بھیجی گئیں۔ ان ای میلز کی صداقت میں اضافے کے لیے ہیکروں نے پیغام کے اختتام پر ادارے کے عہدے دار کے دستخط ، ای میل ایڈریس اور ٹیلی فون اور فیکس نمبر بھی تحریر کیے ہیں۔

اس سلسلے میں Kaspersky کمپنی کے تجزیہ کار اینٹن ایوانوف کا کہنا ہے کہ ابھی تک اس نوعیت کی صرف دس ای میلز کا پتہ چلایا جا سکا ہے تاہم معاملے کی حساسیت کی بنا پر ان ای میلز کی تعداد میں بڑے پیمانے پر اضافہ متوقع ہے۔

ایوانوف نے مزید کہا کہ جیسا کہ لوگوں کی بڑی تعداد اپنی صحت اور زندگی کے حوالے سے تشویش کا شکار ہیں۔ لہذا ہیکروں کی جانب سے لوگوں کو کرونا وائرس کے خطرات سے بچنے کے طریقہ کار پر مشتمل معلومات کے نام سے ،،، Malicious سافٹ ویئرز کی حامل ای میلز بھیجے جانے میں بھی اضافہ ہو گا۔