.

یو اے ای میں کرونا وائرس کے 14 نئے کیسوں کی تصدیق،کل تعداد 59 ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) نے سوموار کو کرونا وائرس کے 14 نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے،جس کے بعد ملک میں اس مہلک وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد 59 ہوگئی ہے۔

یو اے ای کی سرکاری خبررساں ایجنسی وام کے مطابق نئے مریضوں میں چار اماراتی شہری ، تین اطالوی ، ایک شامی اور ایک بھارتی شامل ہے۔

وام نے اپنی رپورٹ میں مزید بتایا ہے کہ ان نئے کیسوں کا فعال انداز میں تحقیق کے بعد پتا چلا ہے اور پہلے سے متاثرہ افراد کے ساتھ میل جول رکھنے والوں کو بھی احتیاطی تدابیر کے تحت اب الگ تھلگ کردیا گیا ہے۔

یو اے ای نے 29 جنوری کو کرونا وائرس کے پہلے کیس کی اطلاع دی تھی۔اس کے بعد سے ملک میں اس مہلک وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے سخت احتیاطی تدابیر کی گئی ہیں جس کی وجہ سے اس سے زیادہ تعدادمیں افراد متاثر نہیں ہوئے ہیں۔

یواے ای نے سوموار کو کرونا وائرس کے پانچ مریضوں کے صحت یاب ہونے کی بھی اطلاع دی ہے۔ان میں دو مقامی شہری ، دو ایتھوپیائی باشندے اور ایک تھائی شہری ہے۔وام کے مطابق ملک میں اب تک کرونا وائرس کا شکار بارہ مریض صحت یاب ہو چکے ہیں۔

امارات کی وزارت تعلیم نے گذشتہ اتوار کو اسکول چار ہفتے کے لیے بند کردیے تھے اور یہ اعلان کیا تھا کہ اس عرصے میں طلبہ کی تعلیمی سرگرمیاں فاصلاتی نظام کے تحت جاری رہیں گی۔

اسکولوں میں موسم بہار کی چھٹیوں کا 8 مارچ سے آغاز ہوا تھا۔یہ دو ہفتے تک جاری رہیں گی۔اس کے بعد مزید دوہفتے تک اسکول بند رہیں گے مگر طلبہ و طالبات کی فاصلاتی نظام کے تحت تدریسی سرگرمیاں جاری رہیں گی۔ان چھٹیوں کا 22 مارچ سے آغاز ہوگا اور یہ پانچ اپریل تک جاری رہیں گی۔

واضح رہے کہ وزارت تعلیم نے کرونا وائرس سے بچاؤ کے لیے حفظ ماتقدم کے طور پر فروری کے آخر میں تمام اسکولوں میں غیر نصابی سرگرمیاں تاحکم ثانی معطل کردی تھیں۔یو اے ای میں کھیلوں کے مقابلے،بڑے اجتماعات اور کنسرٹس بھی عارضی طور پر معطل کردیے گئے ہیں۔

حکام نے شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ کرونا وائرس سے بچنے کے لیے ایک دوسرے سے ملتے وقت معانقہ ، مصافحہ اور ناک سے ناک ملانے سے گریز کریں۔اس کے علاوہ شہریوں اور مکینوں سے کہا گیا ہے کہ وہ غیر ضروری سفر سے گریز کریں۔

امارات کے محکمہ صحت نے کرونا وائرس کے مریضوں کی شناخت کے لیے ایک پروٹوکول بھی وضع کیا ہے۔اس کے تحت کسی بھی متاثرہ شخص کے اسپتال سے رابطے کے بعد 24 گھنٹے کے اندر سکرین ٹیسٹ ہوتے ہیں اور ان کے نتائج کی رپورٹ کی جاتی ہے۔اس کا مقصد یہ ہے کہ کرونا وائرس کا شکار مریض کا تشخیص کے فوری بعد علاج شروع کردیا جائے اور اس کو اسپتال میں الگ تھلگ رکھا جائے تا کہ دوسرے افراد اس سے متاثر نہ ہوسکیں۔