.

کرونا وائرس پھیلنے کا خطرہ:بھارت میں غیرملکیوں کے داخلے پر پابندی عاید

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

بھارت نے مہلک کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے ملک میں غیرملکیوں کے داخلے پر عارضی طور پر پابندی عاید کردی ہے۔

بھارت کے بیورو آف امیگریشن نے جمعرات کو ایک بیان میں کہا ہے کہ 15 اپریل تک تمام غیرملکیوں کے سفری ویزے معطل کردیے جائیں گے۔تاہم بھارت میں پہلے سے موجود غیرملکیوں کے ویزے کارآمد رہیں گے۔

بھارت نے اب تک کرونا وائرس کے 60 کیسوں کی اطلاع دی ہے۔بھارتی حکومت نے یہ بھی اعلان کیا ہے کہ دنیا میں کہیں سے بھی آنے والے ایسے مسافروں کو کم سے کم 14 روز تک طبی تنہائی میں رکھا جائے گا ، جنھوں نے 15 فروری کے بعد چین ، اٹلی ، ایران ، جنوبی کوریا ، فرانس، اسپین اور جرمنی کا سفر کیا ہے۔

امیگریشن بیورو نے بیرون ملک مقیم بھارتی شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ غیر ضروری سفر سے گریز کریں اور انھیں ملک میں واپسی کی صورت میں 14 روز تک طبی تنہائی میں رکھا جاسکتا ہے۔

بھارت نے یہ فیصلہ بدھ کو حکومتی وزراء کے ایک اجلاس کے بعد کیا ہے۔اس میں مسافروں پر ویزے کی مختلف قدغنیں عاید کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

بھارتی حکومت کے اس اعلان کے بعد متحدہ عرب امارات کی وزارتِ خارجہ نے شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ بھارت کے سفر پر نہ جائیں۔ اس نے ایک بیان میں کہا ہے کہ ’’یہ فیصلہ بھارتی حکومت کی ہدایات کی روشنی میں کیا گیا ہے۔ان میں کہا گیا ہے کہ ہرقسم کے بھارتی ویزے کے حاملین کو کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے تاحکم ثانی ملک میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔‘‘