.

یواے ای :کرونا وائرس کے 11 نئے کیس،اماراتی شہریوں کو بھارت نہ جانے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

متحدہ عرب امارات (یو اے ای) نے جمعرات کو کرونا وائرس کے گیارہ نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے۔ان کے بعد ملک میں اس مہلک وائرس سے متاثرہ افراد کی تعداد پچاسی ہوگئی ہے جبکہ حکومت نے اماراتی شہریوں کو ہدایت کی ہے کہ وہ بھارت کے سفر سے گریز کریں۔

یو اے ای کی وزارت صحت کے مطابق نئے متاثرہ افراد میں دو اطالوی ، دو فلپائنی ، ایک مونٹی نیگروکا باشندہ ، ایک کینیڈین ، ایک پاکستانی ، ایک اماراتی ، ایک روسی اور ایک برطانوی شہری ہے۔

وزارت کا کہنا ہے کہ یہ تمام گیارہ افراد حال ہی میں بیرون ملک گئے تھے، وطن واپسی کے بعد انھیں طبی تنہائی میں رکھا جارہا ہے اور کرونا وائرس کی تشخیص کے لیے ان کا میڈیکل ٹیسٹ کیا گیا ہے۔اب ان کی نگرانی کی جارہی ہے اور ان کی حالت مستحکم ہے۔

وزارت کا کہنا ہے کہ یو اے ای میں تمام مراکز صحت میں کرونا وائرس سے متاثرہ افراد کے علاج ومعالجے کے لیے ضروری سہولتیں اورآلات مہیا کردیے گئے ہیں۔

قبل ازیں متحدہ عرب امارات کی وزارتِ خارجہ نے شہریوں کو خبردار کیا ہے کہ وہ بھارت کے سفر پر نہ جائیں۔اس نے یہ انتباہ بھارتی حکومت کے اس اعلان کے بعد جاری کیا ہے جس میں اس نے کہا ہے کہ کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے تمام غیرملکیوں کو بھارت میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔

اس نے مزید کہا ہے کہ ’’یہ فیصلہ بھارتی حکومت کی ہدایات کی روشنی میں کیا گیا ہے۔ان میں کہا گیا ہے کہ ہرقسم کے بھارتی ویزے کے حاملین کو کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے تاحکم ثانی ملک میں داخل ہونے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔‘‘

یو اے ای کی حکومت نے یہ بھی اعلان کیا ہے کہ حاملہ خواتین ،کم زور قوتِ مدافعت کے حامل ضعیف العمر افراد اور معذورین اب اپنے گھروں ہی میں رہ کر کام کریں اور انھیں دفاتر میں آنے کی کوئی ضرورت نہیں ہے۔

یو اے ای نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے کئی ایک دوسرے پیشگی حفاظتی اقدامات بھی کیے ہیں۔اس نے اسکولوں اور جامعات کو آٹھ مارچ کو ایک ماہ کے لیے بند کردیا تھا اور اس مہلک وائرس سے متاثرہ ممالک کے لیے اپنی بعض پروازیں معطل کردی ہیں۔