.

کرونا کی وجہ سے امریکی خریداری مراکز میدان جنگ بن گئے

متعدد امریکی اسٹورز پر کرونا وائرس سے بچاؤ اور کھانے پینے کی اشیاء ختم ہو گئیں

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

کرونا وائرس پھیلنے کے بعد امریکا میں بیشتر سپر اسٹورز پر کھانے پینے کی اشیاء ختم ہو گئی ہیں، جس کے باعث وہاں جھگڑے ہونے لگے ہیں اور خریدار زیادہ سامان خریدنے کے لیے ایک دوسرے الجھ رہے ہیں۔

امریکی سپر اسٹورز میں خریدار زیادہ سے زیادہ راشن جمع کرنے کے لیے چھینا جھپٹی کر رہے ہیں اور ایک دوسرے سے لڑ بھی رہے ہیں۔ خریداری کے دوران سب سے زیادہ مارا ماری کے واقعات پانی، ماسک اور ہینڈ سینی ٹائزرز کے ڈسپلے ریکس کے قریب دیکھنے میں آ رہی ہے۔ امریکا کے بیشتر اسٹورز پر کرونا وائرس سے بچاؤ اور کھانے پینے کی اشیاء ختم ہو گئی ہیں۔

واضح رہے کہ کرونا وائرس دنیا کے 145 ممالک میں پہنچ چکا ہے جہاں اموات کی تعداد 5 ہزار 436 ہو گئی جبکہ 1 لاکھ 45 ہزار 5 سو سے زائد اس وائرس سے بیمار ہیں۔ امریکا میں کرونا وائرس سے مزید 8 ہلاکتوں کے بعد اموات کی مجموعی تعداد 49 ہو گئی ہے جبکہ بیماروں کی تعداد 2269 ہو گئی ہے۔ ورلڈ ہیلتھ آرگنائزیشن کے مطابق یورپ کی صورتِ حال چین سے بھی بدتر ہے۔