.

آئی ایم ایف نے کرونا کا مقابلہ کرنے کے لئے وینزویلا کی درخواست قرضہ مسترد کر دی

جنوبی امریکا میں تیل کی دولت سے مالا مال ملک نے عالمی مالیاتی فنڈ سے پانچ ارب قرضہ مانگا تھا

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

عالمی مالیاتی فنڈ ’’آئی ایم ایف‘‘ نے ناول کرونا وائرس کے عفریت کا مقابلہ کرنے کے لئے جنوبی امریکا کے ملک وینزویلا کی جانب پانچ ارب ڈالر قرضہ کی درخواست مسترد کر دی ہے۔ آئی ایم ایف نے اپنے اس فیصلے کا سبب بتاتے ہوئے کہا ہے کہ وینزویلا کے صدر نیکولس مادورو کی حکومت کو عالمی سطح پر قانونی تسلیم کرنے سے متعلق شکوک وشبہات پائے جاتے ہیں۔

واشنگٹن سے آئی ایم ایف کے بیان میں کہا گیا ہے کہ ’’انتہائی افسوس سے اس امر کا اظہار کرتے ہیں کہ عالمی ادارہ وینزویلا کی جانب سے قرضہ کی درخواست پر عمل درآمد سے قاصر ہے کیونکہ مادورو حکومت کے بین الاقوامی سطح پر قانونی حکومت تسلیم کیے جانے سے متعلق شکوک پائے جاتے ہیں۔‘‘

بیان میں مزید کہا گیا ہے کہ عالمی مالیاتی فنڈ صرف بین الاقوامی برادری میں قانونی جواز رکھنے والے ممالک سے ہی معاملہ کرنے کا پابند ہے اور فی زمانہ کراکس کی حکومت کے قانونی جواز سے متعلق عالمی برادی دو ٹوک موقف کے اظہار سے قاصر دکھائی دیتی ہے۔

امریکا سمیت دنیا کے پچاس ملک مادورو حکومت کے بجائے وینزویلا میں حزب اختلاف کے رہنما خوان غوایدو کو ملک کا قانونی عبوری حکمران تسلیم کرتے ہیں۔ مادورو نے 2018 کو ہونے والے مشتبہ انتخابات میں نئی ٹرم کے لئے کامیابی حاصل کی تھی۔

امریکا اور بین الاقوامی دباؤ مادورو کی حکومتی بساط لیپٹنے میں ناکام چلے آ رہے ہیں۔ انہیں داخلی طور پر وینزویلا فوج اور بین الاقوامی سطح پر روس اور چین کی حمایت حاصل ہے۔

گذشتہ روز مادورو حکومت نے آئی ایم ایف سے کرونا وائرس کے عفریت کا مقابلہ کرنے کی خاطر مدد مانگی تھی۔ یاد رہے کہ تین کی دولت سے مالا مال ملک وینزویلا کو عالمی مالیاتی فنڈ نے آخری مرتبہ 2001 میں قرضہ دیا تھا۔