.

سعودی عرب:کرونا وائرس کے 392 کیسوں کی تصدیق،لوگوں کوگھروں میں رہنے کی ہدایت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:

سعودی عرب نے گذشتہ 24 گھنٹے میں کرونا وائرس کے 48 نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے۔سعودی وزارت صحت کے مطابق ملک میں اس وبا کا شکار ہونے والے افراد کی تعداد 392 ہوگئی ہے۔

وزارتِ صحت کے ترجمان ڈاکٹر محمدالعبد العالی کے مطابق نئے کیسوں میں دارالحکومت الریاض میں کام کرنے والے طبّی عملہ کے پانچ کارکنان شامل ہیں۔باقی تمام افراد پہلے سے اس وبا کا شکار افراد سے میل ملاپ کی وجہ سے اس مہلک وائرس کا شکار ہوئے ہیں۔

انھوں نے کرونا وائرس کا شکار ہونے والے افراد پر زوردیا ہے کہ وہ خود کو دوسروں سے الگ تھلگ رکھیں اور چودہ روز تک قرنطینہ میں رہیں۔انھوں نے دوسرے لوگوں پر زوردیا ہے کہ وہ اپنے گھروں ہی میں رہیں اور کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے گھر کے اندراور باہر اجتماعات سے گریز کریں۔

ان کا کہنا ہے کہ گھروں میں بھی اجتماعات خطرناک ہیں اور پانچ سے بیس افراد تک لوگوں کے اکٹھا ہونے کی حوصلہ شکنی کی جانا چاہیے۔ترجمان نے کہا:’’یہ مت سوچیے کہ ہاتھ نہ ملانے یا ہاتھ دھونے سے آپ محفوظ رہیں گے۔یہ پیشگی حفاظتی قدم ہے لیکن یہی سب کچھ نہیں ہے۔‘‘

ان کا کہنا تھا:’’ نوجوان مردوخواتین یہ خیال کررہے ہیں کہ وہ اس وائرس سے محفوظ ہیں تو ان کی یہ سوچ ناقابلِ قبول ہے۔‘‘انھوں نے عالمی ادارہ صحت کے اس انتباہ کا بھی اعادہ کیا ہے کہ کسی نوجوان کو یہ نہیں سوچنا چاہیے وہ اس نئے کرونا وائرس کا شکار ہونے کے بعد اسپتال جانے سے بچا رہے گا۔

ڈاکٹر محمد العبد العالی نے نیوز کانفرنس کے آخر میں کہا:’’ میں وزارت صحت کے ترجمان کی حیثیت سے نہیں بلکہ ایک ڈاکٹر ، ایک دوست اور ایک بھائی کے طور پر یہ مشورہ دے رہا ہوں کہ آپ جہاں تک ممکن ہو ،اپنے گھروں ہی میں رہیں اور اجتماعات کے خطرات سے بچے رہیں۔‘‘

وزارتِ صحت کے مطابق کرونا وائرس کے تصدیق شدہ مذکورہ کیسوں میں سے 16 تن درست ہوگئے ہیں۔باقی کا علاج جاری ہے اور انھیں قرنطینہ میں رکھا جارہا ہے۔ ان میں دو کی حالت تشویش ناک ہے اور باقی کی حالت قدرے مستحکم ہے۔ واضح رہے کہ سعودی عرب میں ہنوزاس مہلک وائرس سے کسی کی وفات نہیں ہوئی ہے۔