کرونا وائرس: دوائی 'کلوروکوین' کا بے جا استعمال مضر صحت

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size

کرونا وائرس کے سبب دنیا بھر کے ممالک میں مختلف ٹوٹکے اور ادویات کا استعمال جاری ہے مگر ان میں سے ایک دوائی 'کلوروکوین' کے غیر ضروری استعمال کو مضرصحت اور جسم کے لئے زہریلا بھی پایا گیا ہے۔

دنیا بھر میں کلوروکوین کی خاص مقدار کو کرونا وائرس کے مریضوں کو دے کر ان پر اس دوائی کا اثر جانچا جارہا ہے مگر نائیجیریا کے ہسپتالوں میں ایسے مریضوں کو علاج کے لئے لایا جارہا ہے جو کرونا وائرس کے علاج کے لئے بذات خود کلوروکوین کھانا شروع کردی۔

نائیجیریا کی حکومت نے 2005 میں اس دوائی پر پابندی لگا دی تھی مگر اس کے باوجود اس کا استعمال ملیریا کی موثر دوائی کے طور پر ہوتا ہے اور کچھ افراد نے کرونا وائرس کے علاج کے لئے بھی اس کی غیر ضروری مقدار کھا لی اور ان کی طبیعت خراب ہوگئی۔

عالمی ادارہ صحت نے کرونا وائرس کی علامات کے علاج کے لئے کلوروکوین کو ابھی تک منظور نہیں کیا ہے۔

مقبول خبریں اہم خبریں