متحدہ عرب امارات:کرونا وائرس سے ایک اور ہلاکت، متاثرہ کیسوں کی تعداد 664 ہوگئی

پہلی اشاعت: آخری اپ ڈیٹ:
مطالعہ موڈ چلائیں
100% Font Size
دو منٹ read

متحدہ عرب امارات نے گذشتہ چوبیس گھنٹے میں کرونا وائرس سے ایک اور ہلاکت اور 53 نئے کیسوں کی تصدیق کی ہے۔

یو اے ای کی وزارتِ صحت کی خاتون ترجمان فریدہ الحسنی نے منگل کے روز بتایا ہے کہ کرونا وائرس سے مرنے والوں کی تعداد چھے اور متاثرہ کیسوں کی تعداد 664 ہوگئی ہے۔

انھوں نےمزید بتایا ہے کہ آج مرنے والا شخص ایشیائی باشندہ تھا اور اس کی عمر 67 سال تھی۔وہ کئی ایک دائمی امراض کا شکار تھا۔

انھوں نے مزید بتایا ہے کہ نئے کیسوں میں وہ بھی شامل ہیں جو پہلے سے متاثرہ افراد سے گھلنے ملنے کی وجہ سے اس مہلک وائرس کا شکار ہوئے ہیں۔ان افراد نے خود کو تنہائی میں رکھنے اور سماجی فاصلہ اختیار کرنے کی ہدایات پر عمل نہیں کیا تھا۔

مہلک وَبا کا شکار ہونے والے بعض افراد نے حال ہی میں کرونا وائرس سے متاثرہ ممالک کا سفر کیا تھا۔ان نئے کیسوں میں سب سے زیادہ تعداد بھارت سے تعلق رکھنے والے شہریوں کی ہے اور ان کی تعداد 31 ہے۔

فلپائن ،الجزائر ، لبنان ، پاکستان،ایران،کویت ، سوئٹزرلینڈ ، ترکی اور اٹلی کا ایک ایک شہری کرونا وائرس سے متاثرہ ہوا ہے۔ ان کے علاوہ دو مصری ، تین برطانوی اور چار اماراتی شہری کرونا وائرس کا شکار ہوئے ہیں۔

ان تمام نئے کیسوں کی حالت مستحکم ہے اور انھیں محکمہ صحت کے حکام کی نگرانی میں رکھا جارہا ہے۔

متحدہ عرب امارات نے کرونا وائرس کو پھیلنے سے روکنے کے لیے پانچ اپریل تک رات آٹھ بجے سے صبح چھے بجے تک کرفیونافذ کررکھا ہے۔

یو اے ای میں قرنطینہ کے قواعد وضوابط کی خلاف ورزی کے مرتکبین کو بھاری جرمانے بھی عاید کیے جارہے ہیں۔پبلک پراسیکیوشن کے مطابق اگر ایک ڈرائیور کار میں تین سے زیادہ افراد کے ساتھ نظر آیا تواس کو ایک ہزار درہم (272ڈالر) جرمانہ ادا کرنا پڑے گا۔شہری علاقوں میں دوسروں کے ساتھ چلنے پر270 ڈالر اوراجتماعات منعقد کرنے پر 1360 ڈالر جرمانہ عاید کیا جائے گا۔

مقبول خبریں اہم خبریں

مقبول خبریں